Saturday , August 19 2017
Home / دنیا / ترکی، امریکہ اور روسی فوج کے سربراہان کا اجلاس

ترکی، امریکہ اور روسی فوج کے سربراہان کا اجلاس

استنبول ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ترکی، روسی اور امریکی فوج کے سربراہان نے ترکی کے جنوبی شہر انطالیہ میں ملاقات کرتے ہوئے بات چیت کی جس کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ موضوع علاقائی نوعیت کے علاوہ عراق اور شام کے حالات بھی تھے جن پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ ترک فوج کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان کے مطابق علاقائی سیکوریٹی سے مربوط معاملات کے علاوہ شام اور عراق کے حالات پر بھی گفتگو ہوئی۔ اجلاس میں ترک فوج کے چیف آف اسٹاف جنرل ہولوسی اکر، یو ایس جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کے صدرنشین جنرل جوزف ڈنفورڈ اور روسی چیف آف جنرل اسٹاف ویلری جراسیمو کی ملاقات اور گفتگو اپنی نوعیت کی پہلی ملاقات تصور کی جارہی ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی دلچسپ ہوگا قبل ازیں انطالیہ متعدد ناٹو اجلاس اور 2015ء میں G-20 چوٹی کانفرنس کی میزبانی بھی کرچکا ہے۔
ایرانی اور امریکی بحری جہاز آمنے سامنے
واشنگٹن، 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ایرانی پاسداران انقلاب کے کئی حملہ آور بحری جہاز ہفتہ کے روز آبنائے ہرمز میں ایک امریکی جنگی بحری جہاز کے بہت نزدیک پہنچ گئے اوراسے اپنی سمت بدلنے پر مجبور کردیا۔ یہ بات ایک امریکی افسر نے رازداری کی شرط پر بتایا ہے کہ کشتیاں امریکی جہاز سے 600گز کے فاصلہ پر آکر رک گئی تھیں۔ ’’ناقابل تسخیر‘‘ نامی اس امریکی جہاز کے ہمراہ برطانوی بحری کے تین جہاز بھی تھے ان سب کو اپنا راستہ بدلنا پڑا۔
افسر نے بتایا کہ ریڈیو کے ذریعے ایران سے بات کرنے کی کوشش کی گئی تھی مگر کوئی جواب نہیں آیا اس طرح کا آمنا سامنا ’’غیر محفوظ اور غیر پیشہ وارانہ‘‘ تھا۔اس طرح کے واقعات کبھی کبھی پیش آتے رہتے ہیں مگر جنوری میں کافی سنگین معاملہ پیش آیا تھا جب امریکی بحریہ کے جہاز نے آبنائے ہرمز میں چار ایرانی بحری جہازوں کے تیزی سے قریب آنے پر خبردار کرنے کے لئے چار گولے داغے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT