Thursday , April 27 2017
Home / دنیا / ترکی میں 412 مشتبہ کرد دہشت گردوں کیخلاف کارروائی

ترکی میں 412 مشتبہ کرد دہشت گردوں کیخلاف کارروائی

انقرہ ۔ 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ترکی کی وزارت داخلہ کا کہنا ہیکہ پولیس نے سیکوریٹی سے متعلق ایک کارروائی انجام دیتے ہوئے 412 مشتبہ کرد عسکریت پسندوں کو حراست میں لیا ہے۔ چہارشنبہ کے روز 21 صوبوں میں پولیس نے اپنی کارروائی انجام دی تھی جس کے بعد 412 مشتبہ کرد عسکریت پسندوں کو حراست میں لیا گیا تھا۔ وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کئے گئے بیان میں یہ  بھی کہا گیا کہ 13 صوبوں میں دولت اسلامیہ کے مشتبہ دہشت گردوں کے خلاف کارروائی بھی انجام دی گئی جس میں 131 مشتبہ دہشت گرد بھی حراست میں لئے گئے۔ یاد رہیکہ یہ کارروائی اس واقعہ کے صرف ایک روز بعد کی گئی جب ممنوعہ کردستان ورکرس پارٹی (PKK) نے دیار باقر میں  ایک پولیس اسٹیشن پر حملہ کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ پولیس اسٹیشن کے قریب باغیوں نے ایک خفیہ سرنگ بناتے ہوئے اس میں کئی ٹن دھماکو اشیاء رکھ دی تھیں اور بعدازاں انہیں دھماکہ سے اڑا دیا تھا۔ یاد رہیکہ اتوار کو ترکی میں صدر کے اختیارات میں اضافہ کیلئے ایک ریفرنڈم بھی کروایا جارہا ہے۔

 

ترک ریفرنڈم، اردغان کو 51 فیصد ووٹ ملنے کا امکان
استنبول، 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) یہاں آج رائے شماری کے جاری کردہ اعدادو شمار کے مطابق معمولی اکثریت اتوار کوہونے والے ریفرینڈم کے حق میں ووٹ دے گی جس کے بعد صدر طیب ارودغان کو کافی اختیارات حاصل ہوجائیں گے ۔16 اپریل کوہونے والے اس ریفرینڈم سے ترکی میں گورننس کا سسٹم پوری طرح تبدیل ہوجائے گااور یہاں پارلیمانی نظام کی جگہ صدارتی نظام نافذ ہوجائیگا۔ایک ادارہ کی طرف سے کرائی گئی رائے شماری کے مطابق 51.3 فیصد افراد آئینی ترمیم کے حق میں ووٹ دے سکتے ہیں جب کہ 48.7فیصد اس ترمیم کے خلاف ووٹ دے سکتے ہیں۔یہ رائے شماری دس صوبوں میں 1400 افراد سے سوال و جواب پر مبنی ہے ۔رائے شماری 8-9اپریل کو کرائی گئی تھی اس سے ایک ہفتہ قبل کرائی گئی رائے شماری میں 53.3 شہریوں نے آئینی ترمیم کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT