Saturday , September 23 2017
Home / عرب دنیا / ترکی کو دہشت گردی کی سب سے بڑی لہر کا سامنا

ترکی کو دہشت گردی کی سب سے بڑی لہر کا سامنا

آئی ایس اور کرد باغیوں کو کچل دینے کا عزم : اردغان
استنبول ۔ 21 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر ترکی رجب طیب اردغان نے آج کہا کہ اُن کا ملک اب تک تاریخ میں دہشت گردی کی سب سے بڑی لہر کا سامنا کررہا ہے ۔ انھوں نے حالیہ دہشت گرد حملوں کے پس منظر میں اسلامک اسٹیٹ ( آئی ایس ) جہادیوں اور کرد باغیوں کو کچل دینے کے عزم کا اظہار کیا۔ استنبول میں ایک تقریر کے دوران اردغان نے کہا کہ ہم دہشت گرد تنظیموں کو ممکنہ حد تک سختی سے کچل دیں گے ۔ دو دن قبل استنبول میں مشتبہ آئی ایس خودکش حملے میں چار بیرونی شہری ہلاک ہوگئے تھے ۔ انھوں نے کہاکہ دہشت گردوں کے حالیہ حملوں کے پس منظر میں ہم بھی ان سے نمٹنے کیلئے نیا لائحہ عمل تیار کریں گے ۔ انھوں نے وعدہ کیا ہے کہ اس لڑائی میں جمہوری اقدار کو قربان نہیں کیا جائے گا ۔ گزشتہ 8 ماہ کے دوران ترکی چھ بم دھماکوں سے دہل گیا جس میں 200 سے زائد افراد ہلاک ہوئے ۔ ان میں سے چار واقعات کیلئے آئی ایس کو مورد الزام قرار دیا جارہا ہے جبکہ مابقی دو واقعات کی ذمہ داری کرد باغیوں نے قبول کی ہے ۔ ترکی کے طاقتور ترین لیڈر کی توجہ اس وقت ممنوعہ کردستان ورکرز پارٹی پر ہے جس نے دو سال کی جنگ بندی ختم ہونے کے بعد گزشتہ گرما میں باغیانہ روش دوبارہ شروع کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT