Thursday , May 25 2017
Home / Top Stories / تشدد ناقابل برداشت ، مذاکرات ہی واحد راستہ

تشدد ناقابل برداشت ، مذاکرات ہی واحد راستہ

آسام میں شورش پسندوں کو مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کا انتباہ
گوہاٹی ۔ 26 ۔ نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے آج بتایا ہے کہ 200 کیلو میٹر طویل ہند۔بنگلہ دیش سرحد کی حفاظت بی جے پی حکومت کی اولین ترجیح ہے اور آئندہ دیڑھ سال میں مکمل ناکہ بندی کردی جائے گی ۔ انہوں نے یہاں بی جے پی کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ 223.7کیلو میٹر طویل ہند۔بنگلہ دیش سرحد کی حصاربندی کے عہد پر کاربند ہے اور سرحد پر باڑھ نصب کرنے کا کام جاری ہے ۔ توقع ہے کہ آئندہ ایک دیڑھ سال میںمکمل کرلیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش ہمارا پڑوسی ملک ہے اور باہمی تعلقات خوشگوار اور گرمجوشانہ ہے اور مستقبل میں بھی یہ جوش اور جذبہ برقرار رکھا جائے گا۔ مرکزی وزیر داخلہ نے  غیر قانونی تارکین وطن اور ہندو پناہ گزینوں کو شہریت کی منظوری کا واضح تذکرہ کئے بغیر آسامی عوام کو یہ تیقن دیا کہ آسام معاہدہ کے مطابق مقامی آبادی کے مفادات کے تحفظ کے عہد پر بی جے پی کاربند ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت آسام معاہدہ کی شق 6 پر عمل آوری کی پابند ہے اور ضرورت پڑنے پر دستور میں ترمیم بھی کی جائے گی ۔ نیشنل رجسٹر آف سٹیزنس (شہریوں کا اندراج نامہ) کی تجدید کا حوالہ دیتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے کہا یہ کارروائی جاری ہے اور ریاستی حکومت بہت جلد مکمل کرلی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ شورش کے مسئلہ پر مرکز کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گا اور یہ ادعا کیا اکہ ریاست میں تشدد پر کم و بیش قابو پالیا گیا ہے ۔ اگر کسی شخص یا گروپ کو شکایت ، مسئلہ یا تنازعہ ہو تو ہم ، بات چیت کیلئے آمادہ ہیں اور انہیں مذاکرات کی ترغیب دیں گے لیکن اگر کوئی تشدد سے کام لیتا ہو تو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT