Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / تعلیمی ادارہ جات دیہاتوں کی ذمہ داری قبول کرینگے

تعلیمی ادارہ جات دیہاتوں کی ذمہ داری قبول کرینگے

ترقیاتی پروگرام وضع کئے جائینگے۔ ایچ آر ڈی ، دیہی ترقی اور پنچایت راج وزارتوں میں تال میل
نئی دہلی ۔ 13 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اعلیٰ تعلیم کے ممتاز ادارہ مختلف دیہاتوں کی ذمہ داری قبول کریں گے، وہاں تعلیم دینے کی ذمہ داری نبھائیں گے اور ایسے ترقیاتی حل پیش کریں گے جن پر ضلع حکام مرکز کے منصوبہ کے مطابق ایک منفرد مساعی کے تحت عملدرآمد کرسکیں گے۔ عہدیداروں کے مطابق ایچ آر ڈی، دیہی ترقی اور پنچایت راج کی مرکزی وزارتوں کے معتمدین نے گذشتہ روز ’اُنت بھارت پروگرام‘ کے تحت ایک یادداشت مفاہمت پر دستخط کئے۔ اس پروگرام کا مقصد مختلف دیہاتوں کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دیہی ترقی کے عمل کو تعلیمی ادارہ جات سے مربوط کرنا ہے۔ اس پروگرام پر مرحلہ اول میں 92 اضلاع میں عملدرآمد کیا جارہا ہے۔ بنیادی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد مقامی برادری کے ساتھ تال میل، معیاری طرز زندگی کیلئے درکار ضرورتوں کے تخمینہ، تعلیمی ادارہ جات کی تجاویز کو گرام پنچایت ترقیاتی منصوبوں میں شامل کیا جاسکتا ہے جن پر ضلع حکام عمل آوری کیلئے غور کرسکتے ہیں۔ یادداشت مفاہمت کے مطابق وزارت فروغ انسانی وسائل یقینی بنائے گی کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں کی حوصلہ افزائی کی جائے کہ وہ ضلع کلکٹروں کے ساتھ مشاورت میں پانچ ، پانچ پنچایتوں کی ذمہ داری قبول کریں۔ یہ ادارہ گھر گھر اور کمیونٹی کی سطح پر ترقیاتی منصوبوں کی تیاری میں حصہ لیں گے جن پر دیہی ترقی اور پنچایت راج کے حکام کے تعاون سے عمل آوری کی کوشش کی جائے گی۔ وہ عوام کے روزانہ کے مسائل کو حل کرنے کیلئے اختراعی تجاویز فراہم کریں گے اور روزمرہ کی زندگی، توانائی، سلامتی، ماحول کے تحفظ اور بنیادی سہولتوں کے شعبوں کے مسائل حل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ وزارت پنچایت راج گرام پنچایت ڈیولپمنٹ پروگرام (جی پی ڈی پی) کی تیاری کے عمل میں تعلیمی اداروں کے رول کو یقینی بنانے میں مدد کرے گا نیز ان اداروں اور مجالس مقامی کے درمیان عملی سطح پر رابطہ کو یقینی بنائے گی۔ وزارت دیہی ترقی کا رول یہ ہوگا کہ قومی ادارہ برائے دیہی ترقی اور پنچایت راج، حیدرآباد کی خدمات کو دستیاب کرایا جائے تاکہ تعلیمی اداروں سے تعلق رکھنے والے عہدیداروں کو گرام پنچایت ڈیولپمنٹ پلان پر عمل آوری کے قابل بنایا جاسکے۔ انہیں بنیادی حالات سے واقف کرایا جائے گا اور ضروری اقدامات کی رپورٹ تیار کی جائے گی۔ وزارت دیہی ترقی گھر گھر کی سطح پر ایس ای سی سی ڈیٹا دستیاب کرائے گی تاکہ تمام گھرانوں کی گذر بسر سے متعلق ترقیاتی پروگراموں کو وضع کیا جاسکے۔ یہ وزارت ضلع کلکٹرس، ڈی آر ڈی ایز اور دیگر حکام کو متعلقہ پروگرام پر عمل کے سلسلہ میں مؤثر طور پر حصہ لینے کے قابل بھی بنائے گی۔ مفوضہ گرام پنچایتوں سے متعلق جی پی ڈی پی کی تکمیل پر وزارت دیہی ترقی مختلف اسکیمات کے سلسلہ میں وسائل مہیا کرائے گی۔

TOPPOPULARRECENT