Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تعلیمی شعبہ میں زعفرانیت کی روک تھام پر زور

تعلیمی شعبہ میں زعفرانیت کی روک تھام پر زور

ڈیموکرٹیک ٹیچرس فیڈریشن کا احتجاجی جلسہ ، پروفیسر ہرا گوپال و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔6جون(سیاست نیوز) تعلیمی شعبہ جات میںبڑھتی زعفرانیت کی روک تھام کا مطالبہ کرتے ہوئے ڈیموکرٹیک ٹیچرس فیڈریشن تلنگانہ کی جانب سے ایک احتجاجی جلسہ سندریا وگیان کیندرم میں منعقد کیا ۔پروفیسرہراگوپال کے علاوہ کے سرینواس‘ سی ایس آر پرساد‘ نارائن ریڈی‘ راجی ریڈی‘وینکٹ ‘ کشٹیا اور دیگر نے جلسہ سے خطاب کیا۔پروفیسرہرا گوپال نے تعلیم میںبڑھتی زعفرانیت کے سکیولر شبیہہ کیلئے نقصاندہ ثابت ہورہی ہے ۔ انہوںنے تعلیمی نظام میںاصلاحات کے ساتھ بڑی زعفرانیت پر روک لگانے کے اقداما ت کو وقت کی اہم ضرورت قراردیا۔انہوں نے مزید کہاکہ سرکاری اسکولس اور کالجس سے ریاستی حکومت کی عدم دلچسپی کی وجہہ سے ریاست میں خانگی تعلیمی اجارہ داری میںاضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ تلنگانہ کے سرکاری اسکولس کا احیاء عمل میںلانے کی ضرورت ہے جہاں کے غیرمعیاری تعلیمی نظام کی وجہہ سے معاشی پسماندگی کاشکار طبقات کے لوگ بھی اپنے بچوں خانگی اسکولس میںداخلہ کرنے پر مجبور ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایک جانب فسطائی طاقتیںملک کے تعلیمی نظام کو زعفرانی بنانے کی کوشش کررہے ہیںتود وسری جانب حکومتوں کی لاپرواہی کے سبب نونہال معیاری تعلیم حاصل کرنے سے محروم ہیں۔ قبل ازیں ٹی ڈی ایف کلچرل یونٹ کے قائدین او رکارکنوں نے ملک کی موجودہ صورتحال پر ایک نغمہ بھی پیش کیا جس میںدادری کے علاوہ جواہر لال نہرو اور حیدرآباد یونیورسٹی کے واقعات پیش کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT