Wednesday , March 29 2017
Home / Top Stories / تعلیمی قابلیت کا انکشاف نہ کرنے سمرتی ایرانی کی ہدایت !

تعلیمی قابلیت کا انکشاف نہ کرنے سمرتی ایرانی کی ہدایت !

اسکول آف اوپن لرننگ کو سی ای سی کی تازہ وجہ نمائی نوٹس جاری

نئی دہلی ۔ 18 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اسکول آف اوپن لرننگ نے سنٹرل انفارمیشن کمیشن سے کہا ہیکہ مرکزی وزیر سمرتی ایرانی نے اپنی تعلیمی قابلیت پر پیدا شدہ تنازعہ کے درمیان دہلی یونیورسٹی کو ہدایت کی تھی کہ وہ آر ٹی آئی درخواست گذار کو ان کی تعلیمی قابلیت سے متعلق معلومات فراہم نہ کرے۔ تاہم اس کمیشن نے اب اسکول آف اوپن لرننگ (ایس او ایل) کو مرکزی وزیر سمرتی ایرانی کی تعلیمی تفصیلات کے تمام ریکارڈ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ دہلی یونیورسٹی کے سنٹرل پبلک ریلیشنز آفیسر کو کمیشن کی ہدایت کے مطابق ریکارڈ کی پیشکشی میں ناکامی پر تازہ وجہ نمائی نوٹس جاری کی گئی ہے۔ ایرانی کی ڈگریوں پر اس وقت تنازعہ پیدا ہوگیا تھا جب ایک آر ٹی آئی درخواست گذار نے الزام عائد کیا تھا کہ انہوں (ایرانی) نے 2004، 2011 اور 2014ء کے انتخابات میں مقابلہ سے قبل داخل کردہ حلفناموں میں اپنی تعلیمی قابلیت کے بارے میں متضاد معلومات فراہم کی ہیں۔ ایرانی نے اپریل 2004ء کے لوک سبھا انتخابات میں مقابلہ کیلئے داخل کردہ حلفنامہ میں دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے دہلی یونیورسٹی کے اسکول آف کرسپانڈنس (موجودہ ایس او ایل) سے 1996ء میں بی اے کی تکمیل کی تھی۔ تاہم جولائی 2011ء میں گجرات سے راجیہ سبھا کیلئے مقابلہ کے موقع پر داخل کردہ حلفنامہ میں کہا تھا کہ ان کی اعلیٰ ترین تعلیمی قابلیت بی کام پارٹ I ہے۔ درخواست گذار نے دہلی کی ایک عدالت میں مقدمہ بھی دائر کیا تھا۔ تاہم شکایت دائر کرنے میں قابل لحاظ وقت گذر جانے کی بنیاد پر درخواست خارج  کردی گئی تھی لیکن سنٹرل انفارمیشن کمیشن میں یہ مسئلہ ہنوز باقی و برقرار ہے۔ سنٹرل انفارمیشن کمیشن نے گذشتہ روز سیکنڈری امتحانات کے سنٹرل بورڈ کو ہدایت کی تھی کہ سمرتی ایرانی کے 10 ویں اور 12 جماعت کی اسکولی تعلیم کے ریکارڈ کا معائنہ کرنے کی اجازت دی جائے اور سمرتی ایرانی کے اس استدلال کو مسترد کردیا تھا کہ اس میں ان کے شخصی معلومات ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT