Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / تعلیمی پسماندگی کے سبب مسلمان معاشی ترقی سے محروم

تعلیمی پسماندگی کے سبب مسلمان معاشی ترقی سے محروم

مذہب نے جدید تعلیم سے منع نہیں کیا ، چیف منسٹر مفتی سعید کا خطاب
چینائی ، 14 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر جموں و کشمیر مفتی محمد سعید نے آج کہا کہ مسلمانوں کی تعلیمی پسماندگی اُن کی معاشی ترقی میں رکاوٹ بن گئی ہے جبکہ کسی بھی قوم کی ترقی کیلئے تعلیم کا کلیدی رول ہوتا ہے۔ یونائیٹیڈ اکنامک فورم کے اجتماع سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شبہ نہیں ہے کہ تعلیمی پسماندگی کی وجہ سے ہم معاشی ترقی حاصل کرنے سے قاصر ہیں اور میرا یہ ماننا ہے کہ ہماری برادری کی ترقی کیلئے تعلیم کلیدی اہمیت رکھتی ہے ۔ مفتی سعید نے بتایا کہ مسلمانوں کا سماجی ، معاشی اور تعلیمی انحطاط 18 ویں صدی کے اوائل سے شروع ہوگیا تھا، جس کے پیش نظر سرسید احمد خاں اور مولانا ابو الکلام آزاد جیسے قائدین نے ترقی کیلئے تعلیم کو ناگزیر قرار دیا۔ تعلیم کی اہمیت اور افادیت کو محسوس کرتے ہوئے سرسید نے محمڈن اینگلو اورینٹل کالج کا قیام عمل میں لایا تھا جو کہ ترقی کرتے ہوئے علیگڑھ مسلم یونیورسٹی میں تبدیل ہوگیا ۔ مولانا آزاد کا یہ ایقان بھی رہا کہ سکیولر ہندوستان میں حصول تعلیم کے ذریعہ ہی مسلمان خوشحال زندگی گزارسکتے ہیں۔ مفتی سعید نے بتایا کہ مذہب میں جدید تعلیم کے حصول سے منع نہیں کیا گیا اور اپنی مثال پیش کی کہ علیگڑھ مسلم یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کرنے سے قبل انہوں نے مدرسہ میں تعلیم پائی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT