Tuesday , October 24 2017
Home / Top Stories / تعلیم میں حب الوطنی اور رواداری کی شمولیت پرزور

تعلیم میں حب الوطنی اور رواداری کی شمولیت پرزور

نئی دہلی 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بعض یونیورسٹیوں میں جاری تنازعہ کے پیش نظر صدرجمہوریہ ہند پرنب مکرجی نے آج اعلیٰ تعلیمی اداروں سے خواہش کی کہ وہ حب الوطنی، ہمدردی، دیانت داری، رواداری اور خواتین کا احترام کی اہم تمدنی اقدار طلبہ میں پیدا کرنے کی کوشش کریں۔ وہ ایک تقریب سے خطاب کررہے تھے جو جواہرلال نہرو یونیورسٹی اور تیزپور یونیورسٹی کے مشترکہ زیراہتمام تحقیق اور ایجادات میں مہارت کے موضوع پر منعقد کی گئی تھی۔ اُنھوں نے کہاکہ سرفہرست اعلیٰ تعلیمی ادارہ ہونے کے لئے ضروری ہے کہ اس ادارہ میں بعض بنیادی لازمی شرائط کی پابندی کی جاتی ہو۔ اُنھوں نے کہاکہ اُن کے خیال میں اُن میں سے کلیدی اہمیت رکھنے والی خصوصیات اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ تعلیم اور تحقیق سے اساتذہ کے معیار میں اضافہ ہو اور وہ بین الاقوامی معیار کے علاوہ جمہوری تنظیموں کی خصوصیات بھی اپنے طلبہ میں پیدا کریں۔ اُنھوں نے تعلیمی مہارت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ اِس کے ساتھ ہی ساتھ حب الوطنی، ہمدردی، دیانتداری، رواداری، فرائض کی ادائیگی اور خواتین کا احترام بھی طلبہ میں پیدا کیا جانا چاہئے۔

صدرجمہوریہ نے وزیٹرس ایوارڈ تحقیق اور ایجاد کے شعبہ میں پروفیسر راکیش بھٹناگر کو اور تعلیماتی پیراسیٹالوجی گروپ کے لئے جواہرلال نہرو یونیورسٹی کو عطا کیا۔ علاوہ ازیں آسام کی تیزپور یونیورسٹی کو سالانہ وزیٹرس ایوارڈ برائے بہترین یونیورسٹی دیا گیا۔ صدرجمہوریہ تمام سنٹرل یونیورسٹیوں کے وزیٹر ہیں، یہ ایوارڈس ہمارے لئے وجہ تحریک ہونا چاہئے۔ مختلف یونیورسٹیوں اور اُن کی تعلیمی برادریوں میں مزید مہارت پیدا کرنے والے ہونا چاہئے۔ صدرجمہوریہ راشٹراپتی بھون میں ایک تقریب کے دوران خطاب کررہے تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ آپ تمام کو مل جل کر کام کرنا چاہئے تاکہ تعلیم اور تربیت کے مندر تعمیر کرسکیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT