Wednesday , September 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / تقویٰ اور قربانی ، اسوہ ابراہیمی کی اصل روح

تقویٰ اور قربانی ، اسوہ ابراہیمی کی اصل روح

نظام آباد میں جماعت اسلامی کا جلسہ ، محترمہ نفیس سلطانہ اور دیگر کا خطاب

نظام آباد:22؍ ستمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز )حج ایک ایسی عبادت ہے جس میں جانی و مالی دونوں طرح کی مشقت برداشت کرنی پڑتی ہے حج کے ذریعہ سے بندہ کے اندر تقویٰ و پرہیزگاری پیدا ہوتی ہے عیدالاضحی اور اسوہ ٔ ابراہیم علیہ السلام کی اصل روح یہ ہے کہ بندہ کے اندر قربانی کا جذبہ ہمیشہ بیدار رہے اور وہ اپنی اصلاح اور دین کی تبلیغ کیلئے ہمیشہ اپنے آپ کو تیار رکھتے ہوئے اللہ کی راہ میں قربانیاں دیتارہے۔ ان خیالات کا اظہار محترمہ عالمہ نفیس سلطانہ صاحبہ معاون ناظمہ ضلع جماعت اسلامی ہند نظام آباد نے ’’حج عبادت اور خدائیت کا مظہر‘‘ کے عنوان پر جماعت اسلامی ہند شعبہ خدمت خلق کے جلسہ عا م سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوںنے حرم شریف میں رونما ہونے والے حادثہ پر اپنے غم کا اظہار کرتے ہوئے مرحومین کے حق میں دعائے مغفرت کی اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ تمام کو مکہ اور مدینہ کی موت نصیب فرمائے۔ انہوںنے اپنے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے کہاکہ اللہ تعالیٰ کو قربانی کا جانور یا خون یا گوشت نہیں پہنچتا بلکہ قربانی دینے والے کی نیت مطلوب ہوتی ہے جس کے ذریعہ اللہ تعالیٰ کی رضا حاصل کی جاسکتی ہے ۔جو شخص اللہ کی رضا کی خاطر حج ادا کیا ،تمام بے حیائیوں سے رکا، وہ حاجی اپنے وطن کو ایسے لوٹے گا جیسے اس کی ماں نے اسے ابھی جنم دیا ہو۔ ایسے افراد جو استطاعت کے باوجو دفریضہ حج ادا نہیں کرتے اللہ تعالیٰ ان کو کئی ایک آزمائشوں میں مبتلا کردے گا۔ انہوںنے بتایاکہ حج ایک ایسی عالمگیر اجتماعیت والی عبادت ہے جس میں ہمیں مساوات کا درس ملتاہے۔ اجتماع کا آغاز محترمہ نفیس فاطمہ صاحبہ کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ محترمہ تہنیت نے نعت شریف پیش کی۔ محترمہ وسیم کوثر صاحبہ مقامی ناظمہ نے افتتاحی کلمات ادا کرتے ہوئے بتایاکہ ذی الحجہ کا مہینہ دراصل بڑی قربانیوں کا مہینہ ہے ۔ اس مہینے کی مناسبت سے جلسہ کا انعقاد مسلمانوں کو اسلامی تاریخ سے واقف کرواتے ہوئے ان میں قربانی کا جذبہ بیدار کرنا ہے ۔ حضرت ابراہیم علیہ السلام کی سیرت کے مطالعہ سے ہمیں اس بات کااندازہ ہوجاتاہے کہ بغیر قربانی کے کوئی کام انجام نہیں دیاجاسکتاہے دین اسلام کی اشاعت و تبلیغ کیلئے ہر قسم کی قربانی درکار ہوتی ہے ۔ حضرت بی بی حاجرہ علیہ السلام کے اسوہ پر محترمہ نکہت پروین صاحبہ نے مفصل بیان کیا۔ اور بتایاکہ بی بی ہاجرہ کی سیرت دراصل خواتین کیلئے مشعل راہ ہے ۔ وہ ایک خاتون رہنے کے باوجود اپنے شوہر کی اطاعت اور اللہ کے ہر حکم پر سرخم تسلیم کیا جس کی وجہ سے دین ہم تک پہنچا ۔ محترمہ صالحہ پروین نے قربانی کی اہمیت کے موضوع پر خطاب کیا۔ اجتماع عام میں خواتین اور لڑکیوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔

TOPPOPULARRECENT