Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اور آندھراپردیش میں گرمی کی شدید لہر

تلنگانہ اور آندھراپردیش میں گرمی کی شدید لہر

مرنے والوں کی تعداد 111 ہوگئی ، درجہ حرارت میں مزید اضافہ کا امکان
حیدرآباد /8 اپریل ( سیاست نیوز ) تلگو کی دو ریاستوں آندھراپردیش اور تلنگانہ میں گرمی کی شدید شہر چل رہی ہے ۔ آندھرا کے علاقہ رائلسیما میں شدید گرمی کے باعث اموات میں اضافہ ہو رہا ہے ۔ دونوں ریاستوں میں اب تک مرنے والوں کی تعداد 111 ہوگئی ہے ۔ آئندہ چند دن تک گرمی کی شدت برقرار رہے گی ۔ گذشتہ دو دن کے دوران اگرچہ کہ درجہ حرارت میں معمولی کمی ہوئی اور آئندہ 48 گھنٹوں کے بعد گرمی میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔ تلنگانہ میں لو لگنے سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ جبکہ آندھراپردیش میں اب تک 45 اموات درج کی گئی ہے ۔ تلنگانہ کے ڈیزاسٹر منیجمنٹ کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق تلنگانہ کے اضلاع میں سب سے زیادہ نظام آباد میں گرمی درج کی گئی ۔ آندھراپردیش میں وائی ایس آر کڑپہ ضلع میں لو لگنے سے 16 افراد فوت ہوئے ۔ پرکاشم میں 11 اموات کی اطلاعات ہے ۔ اننت پور میں اس وقت گرمی کی شدت کی وجہ سے عوام کا برا حال ہورہا ہے اور یہاں پر کئی افراد کے فوت ہونے کی اطلاعات ہے ۔ وجئے نگرم ، چتور ، کرنول ، سریکاکلم ، کرشنا اور مغربی گوداوری شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے ۔ عوام کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ 12 بجے دن سے 3 بجے کے درمیان گھروں سے باہر نہ نکلیں ۔ لو سے بچنے کے احطیاتی اقدامات کریں ۔ تعمیری اور زرعی ورکرس کو بھی مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ مذکورہ اوقات میں کام روک دیں ۔ دونوں ریاستوں میں گذشتہ سال 2 ہزار اموات کی اطلاعات تھی ۔ آئندہ چند دن کے دوران درجہ حرارت میں مزید اضافہ ہوگا ۔ ان دونوں ریاستوں کو گرمی سے فوری چھٹکارہ نہیں ملے گا ۔ تلنگانہ میں بارش کی کمی اور گرمی کی وجہ سے کئی مقامات پر خشک سالی جیسی صورتحال پیدا ہورہی ہے ۔ اپوزیشن پارٹیوں نے ضلع ورنگل کو خشک سالی کا متاثرہ ضلع قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے ۔ ضلع ورنگل کے تمام منڈلس خشک سالی کا شکار ہے ۔ سی پی ایم کے قائدین نے منڈل ہیڈ کوارٹرس پر احتجاج کرتے ہوئے ضلع کی خشک سالی صورتحال کو اُجاگر کیا اس مسئلہ سے فوری نمٹنے کیلئے ضلع حکام پر زور دیا ۔

TOPPOPULARRECENT