Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اور آندھرا میں اسمبلی نشستوں میں اضافہ کے راہول گاندھی مخالف

تلنگانہ اور آندھرا میں اسمبلی نشستوں میں اضافہ کے راہول گاندھی مخالف

مانسون سیشن میں بل کو رکوانے 17 جماعتوں سے تائید حاصل کی جائے گی
حیدرآباد ۔ 13 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے دونوں تلگو ریاستوں تلنگانہ اور آندھرا پردیش میں اسمبلی نشستوں کی تعداد بڑھانے کے لیے پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں مرکز کی جانب سے پیش کئے جانے والے بل کی مخالفت کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ صدارتی انتخابات میں اپوزیشن امیدوار کی تائید کرنے والی 17 جماعتوں سے تائید حاصل کرنے کا بھی فیصلہ کیا ہے ۔ مرکزی وزیر شہری ترقیات وینکیا نائیڈو نے کسی بھی حال مانسون سیشن میں بل پیش کرنے کا جوابی اعلان کیا ہے ۔ واضح رہے کہ تقسیم آندھرا پردیش کے بل میں تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے لیے کئی وعدے کئے گئے تھے ۔ جن میں اہم وعدے آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ اور ریلوے زون شامل تھا ۔ دونوں ریاستوں کی نمائندگی کرنے والے حکمران جماعتوں کے ارکان پارلیمنٹ ، پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں اسمبلی نشستوں میں اضافہ کرنے کا مرکز پر دباؤ ڈال رہے ہیں ۔ مرکزی حکومت کی ہدایت پر قومی محکمہ جات قانون اور داخلہ نے بل بھی تیار کرلیا ہے اور مانسون سیشن میں پیش کرنے کی تمام تیاریاں مکمل ہوگئی ہیں ۔ پارلیمنٹ میں بی جے پی کے زیر قیادت این ڈی اے کو مکمل اکثریت حاصل ہے جہاں یہ بل آسانی سے منظور ہوجائے گا تاہم راجیہ سبھا میں کانگریس کے زیر قیادت یو پی اے کا موقف مضبوط ہے ۔ راجیہ سبھا میں یو پی اے کے 84 ارکان ہیں جب کہ این ڈی اے ارکان کی تعداد 77 ہے ۔ دوسرے جماعتوں کے ارکان کی تعداد 82 ہے ۔ صدارتی انتخابات میں این ڈی اے امیدوار رامناتھ کووند کی تائید کرنے والے ارکان کی تعداد 118 ہے جب کہ اپوزیشن امیدوار میرا کمار کی 125 ارکان راجیہ سبھا تائید کررہے ہیں اگر راجیہ سبھا میں بل ناکام ہوجاتا ہے تو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کا مشترکہ اجلاس طلب کرنے کی صورت میں بل منظور ہوسکتا ہے ۔ دستور ہند کے آرٹیکل 170 کے تحت اسمبلی نشستوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کا مرکز کو اختیار ہے اس کے لیے کابینی نوٹ اور بل تیار ہوگیا ہے ۔ وزارت داخلہ صرف وزیراعظم آفس کی ہدایت کا انتظار کررہا ہے ۔ ان حالات میں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا وزیراعظم نریندر مودی دونوں تلگو ریاستوں میں اسمبلی نشستوں کے اضافہ کے لیے اس کو وقار کا مسئلہ بنانے اور پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کا مشترکہ اجلاس طلب کرنے کے لیے تیار رہیں گے کیوں کہ ایک طرف کانگریس مخالفت کررہی ہے ۔ دوسری طرف یو پی اے اور این ڈی اے کی حلیف جماعتوں کی بھی تائید حاصل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ بل پیش ہونے کی صورت میں بہار ۔ کیرالا کے علاوہ دوسری ریاستوں سے بھی اسمبلی نشستوں میں اضافہ کرنے کا مطالبہ ہوسکتا ہے ۔ تلنگانہ میں بی جے پی کے قائدین اسمبلی نشستوں میں اضافہ کرنے کی مخالفت کررہے ہیں ۔ صدر آندھرا پردیش کانگریس کمیٹی رگھوویرا ریڈی کی قیادت میں گوداوری میگا پارک کے متاثرین نے دہلی میں کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی سے ملاقات کرتے ہوئے اپنے مسائل کو پیش کیا ہے ۔ رگھوویرا ریڈی نے مانسون سیشن میں پیش کیے جانے والے اسمبلی نشستوں کے اضافہ کے بل کی مخالفت کرنے کی اپیل کی ہے اور یو پی اے حلیف جماعتوں کی تائید حاصل کرنے پر زور دیا ہے ۔ جس سے راہول گاندھی نے اتفاق کیا ہے ۔ آندھرا پردیش کو خصوصی موقف اور ریلوے زون قائم کرنے تک اس بل کی تائید نہ کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ مرکزی وزیر شہری ترقیات وینکیا نائیڈو نے راہول گاندھی کے فیصلے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تقسیم ریاست کے بل میں اسمبلی نشستوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کا اعلان کرنے والی کانگریس کی جانب اچانک موقف تبدیل کرنے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ جات قانون اور داخلہ اسمبلی نشستوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کا بل تیار کرلیا ہے ۔ آندھرا پردیش میں کانگریس کا صفایا ہوگیا ہے ۔ اس لیے بل میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ مگر انہیں اپنے مقصد میں ناکامی ہوگی اور پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں لوک سبھا و راجیہ سبھا میں بل منظور ہوگا ۔۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT