Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ ایمسیٹ ، میڈیسن امیدواروں کی تعداد زیادہ

تلنگانہ ایمسیٹ ، میڈیسن امیدواروں کی تعداد زیادہ

انجینئرنگ داخلوں کی کشش کم ہوگئی ، دلچسپ صورتحال کنوینر ایمسیٹ کا بیان
حیدرآباد ۔ 8 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ میں انجینئرنگ کے مقابل میڈیکل کورسیس میں طلباء وطالبات کی دلچسپی بڑھ گئی ہے ۔ چنانچہ تلنگانہ اسٹیٹ انجینئرنگ اگریکلچر اینڈ میڈیکل کامن انٹرنس ٹسٹ TS-EAMCET کے لیے اس سال جو درخواستیں داخل کی گئیں ان میں میڈیسن میں داخلے کے خواہش مندوں کی تعداد انجینئرنگ میں داخلوں کے خواہش مندوں سے کہیں زیادہ ہے ۔ اب تک انجینئرنگ میں داخلے کے خواہش مندوں کی تعداد زیادہ رہا کرتی تھی اس کے پیش نظر انجینئرنگ کالجس میں زائد نشستوں کی گنجائش مہیا کی گئی تھی ۔ انجینئرنگ کے مقابل میڈیکل اور اگریکلچرل کورس میں داخلے کے خواہش مندوں کی تعداد ہمیشہ کم رہی ۔ لیکن اس مرتبہ اب تک میڈیسن کے لیے 20 ہزار 433 درخواستیں وصول ہوئی ہیں ۔ انجینئرنگ کے لیے 16ہزار 5 سو درخواستیں وصول ہوئیں ۔ میڈیسن کے لیے 20 ہزار 433 درخواست گذاروں میں 13 ہزار 433 درخواستیں لڑکیوں کی ہیں یعنی درخواست گذار لڑکوں سے دوگنی تعداد لڑکیوں کی ہے ۔ پیر 7 مارچ تک ایمسیٹ حکام کو جو 37 ہزار 339 درخواستیں آن لائن بھیجی گئیں ۔ ان میں 19 ہزار 921 درخواستیں لڑکیوں کی ہیں یہ درخواستیں جن کورسیس کے لیے بھیجی گئیں ان میں انجینئرنگ و میڈیکل کورسیس شامل ہیں ۔ کنوینر ایمسیٹ 2016 این وی رمنا راؤ نے کہا کہ یہ دلچسپ رجحان ہے جو اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھا گیا ۔ انہیں مسلسل ساتویں مرتبہ کنوینر ایمسیٹ مقرر کیا گیا ہے جو ایک ریکارڈ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ممکن ہے انجینئرنگ امیدواروں کی تعداد میں اضافہ ہو لیکن اس وقت تو دلچسپ صورتحال ہے ۔ تلنگانہ کی طرح آندھرا پردیش میں بھی انجینئرنگ کی بہ نسبت میڈیسن میں داخلے کے لیے زیادہ درخواستیں وصول ہوئی ہیں گذشتہ چار سال کے اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ 2012 سے ہی انجینئرنگ کے امیدواروں کی تعداد کم ہونا شروع ہوئی ۔ 2012 میں تلنگانہ میں ایک لاکھ 34 ہزار 797 انجینئرنگ میں داخلے کے خواہش مند تھے ۔ 2013 میں یہ تعداد ایک لاکھ 30 ہزار اور 2014 میں ایک 8 لاکھ 26 ہزار 71 رہ گئی ہے ۔ انجینئرنگ کی کشش کم ہونے کی وجہ گذشتہ سال کالجس کے الحاق کیلئے جواہر لال نہرو ٹکنالوجیکل یونیورسٹی کے سخت گیر قواعد اور فیس واپسی کے سخت قواعد ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT