Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ حکومت 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کیلئے سنجیدہ : جناب محمد محمود علی

تلنگانہ حکومت 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کیلئے سنجیدہ : جناب محمد محمود علی

تحفظات سے بے روزگاری کا خاتمہ اور تعلیمی میدان میں سہولت : جناب عامر علی خاں
شمس آباد ۔ 15 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز) : راجندر نگر میں ایرا ٹیالنٹ اسکول میں اردو زبان کا تحفظ اور اس کی ترقی کے لیے ایک اجلاس منعقد کیا گیا جس میں جناب محمد محمود علی ڈپٹی چیف منسٹر نے مہمان خصوصی اور جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست اور پروفیسر ایس اے شکور اعزازی مہمان کی حیثیت سے شرکت کئے ۔ جناب محمد محمود علی نے اپنی مخاطبت میں کہا کہ روزنامہ سیاست ہمیشہ سے ہی اردو کے مسائل کو حل کرنے کے لیے آگے آکر خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ تلنگانہ تحریک میں بھی روزنامہ سیاست نے اہم رول ادا کیا تھا اور اب12  فیصد تحفظات کے لیے تحریک چلائی جارہی ہے ۔ ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں اور جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر سیاست قوم کی خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں ان کی جانب سے اقلیتوں کے مسائل اور خاص کر حکومت کی اسکیمات کو اخبار کے ذریعہ مفت تشہیر کرتے ہوئے گھر گھر تک پہنچاتے ہیں جس سے ہزاروں افراد استفادہ بھی کررہے ہیں ۔ گذشتہ 68 سال میں مسلمانوں کا حال بالکل بدل چکا ہے ۔ پہلے مسلمان دیوڑھیوں میں رہا کرتے تھے اور آج سلم علاقوں میں چھوٹے چھوٹے مکانات میں زندگی گزار رہے ہیں ۔ ٹی آر ایس حکومت تمام مذاہب کے لوگوں کی ترقی کے لیے مختلف اسکیمات متعارف کرتے ہوئے انہیں روزگار پر لگارہی ہے ۔ ایک سال کے اندر 21832 غریب لڑکیوں کی شادی کے لیے شادی مبارک اسکیم کے ذریعہ فی کس 51 ہزار روپئے ان کے اکاونٹ میں جمع کئے گئے ۔ غریب لڑکوں کے لیے اعلیٰ تعلیم کے لیے بھی حکومت اقدامات کررہی ہے ۔ جس کے تحت بیرون ملک تعلیم حاصل کرنے والوں کو دس لاکھ روپئے اور ٹکٹ کا بھی انتظام حکومت کی جانب سے کیا جائے گا ۔ اقلیتی بجٹ 1131 کروڑ روپئے ہے جو تمام بجٹ مسلمانوں کی ترقی کے لیے خرچ کیا جائے گا ۔ مفت تعلیم کا وعدہ کیا تھا جس کو بہت جلد عمل میں لایا جائے گا اور ساتھ ہی اسکالر شپس کے مسائل بھی حل کر لیے جائیں گے ۔ ریاست میں لا اینڈ آرڈر کو بہتر کرنے کے لیے فی پولیس اسٹیشن کو 75 ہزار روپئے ادا کیا جارہا ہے ۔ جی ایچ ایم سی حدود میں آٹو اسکیم کے تحت ایک ہزار آٹوز تقسیم کئے جارہے ہیں اور بہت جلد ہر ضلع میں 500 آٹوز تقسیم کرنے کے لیے حکومت تیار ہے ۔ تلنگانہ حکومت عوام کے مسائل کو حل کرنے سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ 42 کلومیٹر طویل روڈ موسیٰ ندی پر سے تعمیر کی جائے گی ۔ چیف منسٹر نے مسلمانوں سے وعدہ کیا تھا کہ وہ 12 فیصد تحفظات فراہم کریں گے جس کے لیے سدھیر کمیشن قائم کی گئی اور پوری ریاست میں سروے کیا جارہا ہے ۔ حکومت چھ لاکھ مکانات تعمیر کر کے بے گھر افراد کو مکانات تقسیم کرے گی ۔ جناب محمد محمود علی نے کہا کہ مسلمانوں کے ساتھ دوسری حکومتوں میں نا انصافی ہوئی ہے لیکن ٹی آر ایس ایک سیکولر حکومت ہے وہ مسلمانوں کے ساتھ انصاف کا عزم رکھتی ہے ۔ انہوں نے 12 فیصد تحفظات سے متعلق جناب عامر علی خاں سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تحفظات کی فراہمی کے لیے حکومت کو کچھ وقت لگے گا ۔ سیاست کی جانب سے چلائی جارہی تحریک پر انہوں نے جناب زاہد علی خاں اور جناب عامر علی خاں کو مبارکباد پیش کی۔ جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر سیاست نے اپنی مخاطبت میں کہا کہ سیاست کی جانب سے چلائی جارہی تحریک کا مقصد مسلمانوں کو تحفظات کی فراہمی کرانا ہے ۔ ہماری اس کوشش میں عوام بھی ہمارا ساتھ دے رہے ہیں ۔ 12 فیصد تحفظات مسلمانوں کو مل جائے تو لاکھوں افراد کو فائدہ حاصل ہوگا ۔ 12 ہزار سے زائد سرکاری ملازمتیں فراہم ہوں گی اس کے علاوہ تعلیمی میدان میں مفت تعلیم حاصل ہوگی ۔ ہزاروں خاندانوں کو فائدہ ہوگا ۔ اس تحریک سے ہر شخص کو جڑنے کی ضرورت ہے ۔ ہماری تحریک سے ہی حکومت پر دباؤ پڑے گا اور حکومت دباؤ میں مسلمانوں کو تحفظات فراہم کرنے پر مجبور ہوجائے گی ۔ جناب عامر علی خاں نے بتایا کہ ہندوستان کے دستور کے مطابق ہی ہم ہمارا حق مانگ رہے ہیں ۔ مسلمانوں کی پسماندگی ، معاشی حالت کو دیکھتے ہوئے تحفظات دینا حکومت کا فرض ہے ۔ آزادی کے وقت سرکاری ملازمتوں میں مسلمانوں کا فیصد 40 فیصد تک تھا اب گھٹ کر صرف 0.7 فیصد تک پہنچ گیا ہے ۔ تحفظات مسلمانوں کے لیے ضروری ہے حکومت تلنگانہ 60 ہزار مکانات تقسیم کررہی ہے جس کے تحت پانچ ہزار سے زائد مکانات مسلمانوں کو فراہم ہوں گے ۔ آج سیاست کی تحریک کی گونج ریاست کے ہر مقام تک پہنچ چکی ہے ۔ ہر مسلمان کافرض ہے کہ وہ اس تحریک میں شامل ہو کر تحریک کو آگے بڑھائے اور حکومت پر زور ڈالے تاکہ بی سی کمیشن کے ذریعہ تحفظات فراہم کریں ۔ ریاست تلنگانہ میں 45 لاکھ مسلمان ہے ۔ 12 فیصد تحفظات ملنے سے ہر خاندان کو فائدہ ہوگا ۔ ریاست تلنگانہ کا بجٹ ایک لاکھ کروڑ روپئے ہے اور مسلمانوں کے لیے گیارہ سو کروڑ ہے اگر تحفظات مل جائے تو ہمارا بجٹ 12 ہزار کروڑ روپئے تک پہنچ جائے گا ۔ جناب عامر علی خاں نے کہا کہ جس طرح بچے کی رونے کی آواز سن کر ماں اسے کھانا کھلاتی ہے اسی طرح ہماری آواز تحفظات کے لیے ہونی چاہئے ۔ پروفیسر ایس اے شکور اسپیشل آفیسر حج کمیٹی نے اپنی مخاطبت میں کہا کہ نوجوان صحافی جناب عامر علی خاں قوم و ملت کا درد رکھتے ہوئے قوم کی بھلائی کے لیے کام کررہے ہیں  جو قابل مبارکباد ہے ۔ حکومت اردو کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ جس کے لیے وہ مختلف اسکیمات کے ذریعہ بے روزگاری کے خاتمہ کے لیے کام کررہی ہے ۔ روزنامہ سیاست ہمیشہ سے حکومت کی اسکیمات کو اخبار کے ذریعہ مفت تشہیر کرتے ہوئے عوام کو فائدہ پہنچا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر والدین کا فرض ہے کہ وہ اپنے بچوں کو انگریزی کے ساتھ اردو کی بھی تعلیم دلوائے تاکہ ہماری مادری زبان کا تحفظ ہم خود کرسکیں ۔ اس موقع پر محمد اسمعیل الرب انصاری ، ایس ان جاوید انسپکٹر کرائم شمس آباد کے علاوہ دیگر افراد موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT