Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ سے راجیہ سبھا کی دو نشستوں کے انتخابات کیلئے اعلامیہ کی اجرائی

تلنگانہ سے راجیہ سبھا کی دو نشستوں کے انتخابات کیلئے اعلامیہ کی اجرائی

۔30 مئی تک پرچہ جات نامزدگیوں کے ادخال کی مہلت ۔ ضرورت پڑنے پر 11 جون کو رائے دہی ہوگی

حیدرآباد۔/24مئی، ( سیاست نیوز) راجیہ سبھا کے انتخابات کیلئے اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے۔ تلنگانہ کی 2 نشستوں کیلئے پرچہ نامزدگی کے ادخال کا آج آغاز ہوگیا۔ 30مئی تک پرچہ جات نامزدگی قبول کئے جائیں گے جبکہ یکم جون کو پرچہ جات کی جانچ ہوگی۔ 3جون کو پرچہ جات واپس لئے جاسکتے ہیں  ۔ ضرورت پڑنے پر 11جون کی صبح 9بجے سے سہ پہر 4 بجے تک رائے دہی منعقد ہوگی اور اسی روز شام 5 بجے سے ووٹوں کی گنتی کا آغاز ہوگا۔ 13 جون تک انتخابی عمل مکمل کرلیا جائیگا۔ انتخابات کیلئے اسمبلی، سکریٹریٹ کے عہدیداروں نے تیاریوں کا آغاز کردیا ہے۔ راجیہ سبھا انتخابات کیلئے تلنگانہ اسمبلی کے لیجسلیٹو سکریٹری ڈاکٹر راجہ سدا رام ریٹرننگ آفیسر اور جوائنٹ سکریٹری ڈاکٹر نرسمہا چاریلو اسسٹنٹ ریٹرننگ آفیسر کی حیثیت سے فرائض انجام دیں گے۔ تلنگانہ میں راجیہ سبھا کی 2 نشستوں کیلئے انتخابات ہوں گے۔ اسی دوران ریاستی الیکٹورل آفیسر بھنور لال نے انتخابات کے سلسلہ میں اسمبلی، سکریٹریٹ کے عہدیداروں سے بات چیت کی۔ انتخابات کی تکمیل تک ریٹرننگ آفیسر اور اسسٹنٹ ریٹرننگ آفیسر کی ذمہ داری ہے کہ وہ ریاستی الیکشن کمیشن اور مرکزی الیکشن کمیشن کو باقاعدگی سے رپورٹ روانہ کریں۔ ریاست میں ابھی تک کسی جماعت نے اپنے امیدواروں کے ناموں کا اعلان نہیں کیا ہے۔ اپوزیشن اپنی عددی طاقت کے اعتبار سے ایک بھی نشست پر کامیابی کے موقف میں نہیں ہے لہذا توقع ہے کہ برسراقتدار ٹی آر ایس دونوں نشستوں پر کامیابی حاصل کرلے گی۔ ریاست کے جو راجیہ سبھا ارکان جاریہ ماہ اپنی میعاد مکمل کررہے ہیں ان میں وی ہنمنت راؤ ( کانگریس )، جی سدھا رانی ( تلگودیشم ) شامل ہیں۔ سدھا رانی نے حالیہ عرصہ میں ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔ ٹی آر ایس میں راجیہ سبھا کی نشست کیلئے زبردست دوڑ دھوپ اور سرگرمیاں دیکھی جارہی ہیں جبکہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اس معاملہ کو مکمل طور پر اپنے کنٹرول میں رکھا ہے اور وہ اس سلسلہ میں انتہائی رازداری سے کام لے رہے ہیں۔ پارٹی میں راجیہ سبھا کی نشست کے کئی دعویدار ہیں تاہم کے سی آر کس کے نام کو منظوری دیں گے اس کا انکشاف پرچہ نامزدگی کے ادخال کے آخری دن ہوگا۔ اطلاعات کے مطابق چیف منسٹر دونوں نشستوں کیلئے اپنے بااعتماد رفقاء کو نامزد کرسکتے ہیں اور دونوں بھی پارٹی سے زیادہ چیف منسٹر کے شخصی مددگاروں میں شمار کئے جاتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT