Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں اسمبلی و پارلیمنٹ کے ضمنی انتخابات کی پیش قیاسی

تلنگانہ میں اسمبلی و پارلیمنٹ کے ضمنی انتخابات کی پیش قیاسی

وفاداریاں تبدیل کرنے والے ارکان اسمبلی و پارلیمنٹ کو سپریم کورٹ کی نوٹس کا خیر مقدم : محمد علی شبیر
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے سپریم کورٹ کی جانب سے سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے والے 25  ارکان اسمبلی اور اسپیکر اسمبلی کو نوٹس دینے کا خیر مقدم کرتے ہوئے آئندہ سال جنوری فروری میں 25 اسمبلی اور 3 لوک سبھا حلقوں میں ضمنی انتخابات منعقد کرنے کی پیش قیاسی کرتے ہوئے کانگریس کیڈر کو انتخابی تیاریاں شروع کردینے کا مشورہ دیا ۔ آج اسمبلی کے میڈیا ہال میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ کانگریس کے رکن اسمبلی سمپت کمار کی درخواست کا جائزہ لینے والے سپریم کورٹ بنچ کے ججس جسٹس جوزف کورین اور جسٹس شیواکرتی سنگھ نے اسپیکر اسمبلی اور 25 ارکان اسمبلی کو تین ہفتوں میں جواب دینے کی مہلت دی ہے اور چوتھے ہفتے میں فیصلہ کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ ہر معاملے میں ملک میں نمبرون ہونے کا دعویٰ کرنے کے عادی ہونے والے چیف منسٹر کے سی آر سیاسی انحراف کرانے کے معاملے میں بھی نمبرون ہے ۔ انہیں اپنی خود کی قابلیت اور جمہوریت پر ایقان نہیں ہے ۔ 27 ماہی ٹی آر ایس کے دور حکومت میں 47 عوامی منتخب نمائندوں جن میں 25 ارکان اسمبلی 18 ارکان قانون ساز کونسل اور 4 ارکان پارلیمنٹ کو نئی ریاست میں حکمران ٹی آر ایس میں شامل کرتے ہوئے بے شرمی کا مظاہرہ کیا گیا ہے ۔ مسٹر محمد علی شبیر نے توقع کا اظہار کیا کہ سپریم کورٹ سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے والے ارکان اسمبلی کی رکنیت منسوخ کردیں گے ۔ کانگریس پارٹی ضمنی انتخابات کی بہت پہلے سے تیاری شروع کرے گی ۔ ریٹائرڈ انجینئرس کی جانب سے کانگریس کے پاور پوائنٹ پریزنٹیشن کو مسترد کردینے کے سوال کا جواب دیتے ہوئے مسٹر محمد علی شبیر نے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر نے کانگریس کو چیلنج کیا ہے اور کانگریس نے کے سی آر اور ٹی آر ایس کو چیلنج کیا ہے۔۔

TOPPOPULARRECENT