Saturday , April 29 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں اقلیتی اداروں کی تقسیم پر جائزہ اجلاس

تلنگانہ میں اقلیتی اداروں کی تقسیم پر جائزہ اجلاس

وقف بورڈ اثاثہ جات پر اے پی و تلنگانہ میں تنازعہ برقرار
حیدرآباد۔/20اپریل، ( سیاست نیوز) تلنگانہ میں شیڈول 10 میں شامل اقلیتی اداروں کی تقسیم کے مسئلہ پر سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے آج اعلیٰ سطحی اجلاس طلب کیا۔ وقف بورڈ، اقلیتی کمیشن اور اردو اکیڈیمی کے ملازمین اور اثاثہ جات کی تقسیم کا جائزہ لیا گیا۔ وقف بورڈ کے اثاثہ جات کے سلسلہ میں تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے درمیان تنازعہ برقرار ہے۔ اس کے علاوہ بینکوں میں موجود ڈپازٹس پر آندھرا پردیش کی مضبوط دعویداری ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ ایم اے منان سے تمام تفصیلات حاصل کیں اور کہا کہ اثاثہ جات اور رقم کے بارے میں رپورٹ تیار کرتے ہوئے ایڈوکیٹ جنرل کو پیش کی جائے۔ آندھرا پردیش کے مختلف اوقافی اداروں کی رقومات تلنگانہ کے اکاؤنٹ میں ہے اور آندھرا پردیش کے عہدیدار اس رقم کو منتقل کرنے کی مانگ کررہے ہیں۔ اقلیتی کمیشن، اردو اکیڈیمی اور سروے کمشنر وقف کے بارے میں بھی علحدہ رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی گئی۔ اجلاس میں سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور، سروے کمشنر وقف محمد اسد اللہ اور سکریٹری اقلیتی کمیشن شریمتی پدما سندری اور دوسرے شریک تھے۔ تلنگانہ ریاست کے قیام کے تین سال مکمل ہونے کو ہیں لیکن ابھی تک شیڈول 10 میں شامل اداروں کی تقسیم کے مسئلہ پر دونوں ریاستوں میں اختلافات برقرار ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ آندھرا پردیش وقف بورڈ کے حکام 50کروڑ روپئے کی فی الفور اجرائی کا مطالبہ کررہے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT