Sunday , July 23 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں بی جے پی کے بڑھتے قدم روکنے کے ٹی راما راؤ سرگرم

تلنگانہ میں بی جے پی کے بڑھتے قدم روکنے کے ٹی راما راؤ سرگرم

اضلاع کے دورے ، حکومت کی فلاحی اسکیمات سے عوام کو واقف کروانے پر خصوصی توجہ
حیدرآباد۔4اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے استحکام کی کوششوں کو روکنے کی ذمہ داری ریاستی وزیر مسٹر کے ٹی راما راؤ نے لے رکھی ہے اور وہ نہ صرف بی جے پی بلکہ کانگریس اور تلگودیشم کی جانب سے کی جانے والی استحکام کی کوششوں کو بھی ناکام بنانے کے لئے بہت جلد ریاست گیر سطح پر اجلاس و جلسہ عام منعقدکرتے ہوئے حکومت کی جانب سے چلائی جانے والی فلاحی اسکیمات کی تشہرے کا آغاز کریں گے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ بہت جلد تینوں سیاسی جماعتوں کی کوششوں کو دھکہ پہنچانے کیلئے اپنی حکمت عملی کا اعلان کرتے ہوئے ریاست کے تمام اضلاع اور دیہی علاقوں تک پہنچ کر عوام سے ملاقات کریں گے۔ تلنگانہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی تیز ہورہی سرگرمیوں کو روکنے کے علاوہ تلنگانہ راشٹر سمیتی کی جانب سے کانگریس میں دوبارہ استحکام نہ ہو اس بات پر توجہ دی جا رہی ہے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے اس سلسلہ میں اپنے اضلاع کے دوروں کا عملی طور پر آغا ز کردیا ہے لیکن اس دورہ کے متعلق ابھی تک اس بات کی وضاحت نہیں کی گئی ہے کہ ریاست میں دیگر سیاسی جماعتوں کے استحکام کو روکنے کیلئے یہ دورے کئے جا رہے ہیں لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ ریاست میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے دیہی علاقوں میں استحکام کی کوششوں کے خلاف حکومت نے فوری طور پر حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے حرکت میں آنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ ریاست میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی برقراری اورریاست کی ہمہ جہت ترقی کا سلسلہ جاری رہے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے ریاست تلنگانہ میں تلنگانہ راشٹر سمیتی کے فروغ اور استحکام کیلئے ریاست بھر کے عوام کے درمیان پہنچ کر انہیں حکومت کی کارکردگی سے واقف کرواتے ہوئے ریاست کو فرقہ واریت سے پاک بنائے رکھنے کا عزم کئے ہوئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ مسٹر کے ٹی راما راؤ اضلاع کے اسدورہ کے دوران نہ صرف بھارتیہ جنتا پارٹی بلکہ کانگریس کو بھی دوبارہ مستحکم ہونے سے روکنے کی کوشش کریں گے اور ساتھ ہی تلگو دیشم کو بھی تلنگانہ میں کوئی مقام بنانے کا موقع فراہم نہ کرنے کی کوشش کریں گے۔ کانگریس کے متعلق ان کا کہنا ہے کہ کانگریس قائدین ریاست کے مفادات کے تحفظ کیلئے اپنے طور پر فیصلہ کرنے سے قاصر ہیں اور انہیں دہلی سے فرمان کے حصول کا انتظار کرنا ہوتا ہے جبکہ ٹی آر ایس حکومت میں ریاست کے مفادات کے تحفظ کے علاوہ ریاست کی ترقی کیلئے اپنے طور پر فیصلہ کیا جاتا رہا ہے اور مستقبل میں بھی یہی سلسلہ جاری رہے گا۔ مسٹر کے ٹی راما راؤتلگو دیشم کو بین ریاستی پارٹی قرار دیتے ہوئے یہ کہہ رہے ہیں کہ آندھرائی تسلط والی سیاسی جماعت سے تلنگانہ کی ترقی کی توقع کرنا دوبارہ ریاست کو آندھرائی قائدین کا ذہنی غلام بنانے کے مترادف ہے۔ برسر اقتدار جماعت کی جانب سے اپوزیشن جماعتوں بالخصوص بی جے پی کے خلاف مہم کا آغاز اس بات کی ثبوت ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی ریاست تلنگانہ میں خاموشی کے ساتھ استحکام حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT