Friday , July 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / تلنگانہ میں تعلیمی فروغ کیلئے اقدامات جاری

تلنگانہ میں تعلیمی فروغ کیلئے اقدامات جاری

ناگرکرنول میں گرلز جونئیر کالج کی عمارت کا افتتاح ، ڈپٹی سی ایم کڈیم سری ہری کا خطاب

vناگرکرنول /14 جولائی ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) ریاست تلنگانہ کی تعلیمی ابتر صورتحال کی ذمہ دار سابقہ آندھرائی حکومتیں ہیں۔موجود ہ تلنگانہ حکومت کی جانب سے ریاست بھر میں اعلٰی تعلیم کے فروغ کے لئے بھاری رقم کی منظوری عمل میں لائی جارہی ہے۔ان خیالات کا اظہار ڈپٹی چیف منسٹر وریاستی وزیر برائے اعلٰی تعلیم مسٹرکے سری ہری نے کیا۔ریاستی وزیر برائے پنچایت راج و ریاستی وزیر تعلیم مسٹر کڈیم سری ہری نے ضلع محبوب نگر ، ضلع گدوال و ضلع ناگرکرنول کا دورہ کرتے ہوئے 16کروڑ روپیوں کی لاگت کے ترقیاتی کاموں کا افتتاح کیا۔اس موقع پر ضلع ناگرکرنول کے منڈل کوڈئیر میں نو تعمیر شدہ جونئیر کالج گرلزکی عمارت کے افتتاح کے علاوہ کولاپور میں پی جی کالج میں زیر تعلیم طلباء و طالبات کے لئے ہاسٹل کی عمارتوں کے لئے علحدہ علحدہ سنگ بنیاد رکھا۔بعد ازاں منعقدہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے مسٹرکے سری ہری نے کہا کہ سابقہ حکومتوں کی جانب سے تعلیمی شعبے کو تباہ کردیا گیاہے آج موجودہ حکومت اس کی پابجائی کے لئے اقدامات کررہی ہے اور ریاست میں تعلیمی شعبے کو مستحکم کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ریاست بھر کے مختلف یونیورسٹیز کی ترقی کے لئے حکومت نے 420کروڑ روپئیے مختص کی ہے جس میں اب تک 40 کروڑ روپئیے جاری کئے گئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ یونیور سٹیز کے مخلوعہ جائدادوں کی بھرتی کے لئے 1550 جائدادوں کی منظوری عمل میں لائی گئی ہے اور اس سال 1060 جائدادوں کوبھرتی کیا جائیگا اور آئندہ سال 500 جائدادوں کوبھرتی عمل میں لائی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ ریاست بھر میں منظورہ 86 کے جی بی گروکل اسکولس میں صرف متحدہ ضلع محبوب نگرہی میں 17 اسکولوں کو منظور کیا گیا ہے ۔وزیر تعلیم نے کہا کہ انگلش میڈیم کے انٹرمیڈیٹ اور ڈگری کالجوں کا قیام عمل میں لاتے ہوئے طلباء کو اعلٰی تعلیم کے لئے راہ ہموار کرینگے۔انہوں نے کہا کہ ریاست بھر میں بغیرکٹوتی کے برقی کی سربراہی کی جارہی ہے اور فلاحی کاموں کے لئے 48 ہزارکروڑ روپیوں کا خرچ کیا جارہا ہے۔ریاست بھر میںغریب و کمزورطبقات کو مفت تعلیم فراہم کرنے کے لئے چیف منسٹر کے چندرشیکھرراؤ نے ریاست بھر میں 525گروکل اسکولوں کو قائم کیا۔انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندرشیکھرراؤ دوراندیشی کے ساتھ ہریتا ہارم پروگرام کی تشکیل عمل میں لاکر ریاست بھر میں 230 کروڑ پودوں کی شجرکاری کا نشانہ بنایاہے۔بعدا ازاں ریاستی وزیر مسٹر جے کرشنا راؤ نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا ایک دور میں کولا پور قحط زدہ علاقے کے طور پر مشہور تھا لیکن آج تلنگانہ حکومت کی جانب سے کلواکرتی آبپاشی پراجکٹ کے کاموں میں تیزی کے سبب یہ علاقہ سرسبزوشاداب ہوتا جارہا ہے۔پروگرام میں اراکین اسمبلی مسٹر جی بالراج، مسٹر سرینواس گوڑ،صدر نشین ضلع پریشدمسٹر بی بھاسکر، جوائنٹ کلکٹر مسٹر سریندرکرن، کولاپورمارکٹ کمیٹی چئیرمین مسٹر رام چندراریڈی، ٹی آرایس کے قائدین و مختلف محکمو جات سے وابستہ عہدیداران موجود تھے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT