Monday , April 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں تنہا رہنے والی خواتین کا جامع سروے

تلنگانہ میں تنہا رہنے والی خواتین کا جامع سروے

یکم اپریل سے ماہانہ وظیفہ کی اجرائی کیلئے حکومت کے اقدامات
حیدرآباد ۔ 19 ؍ فبروری(سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ ریاست بھر میں پائی جانے والی تنہا خواتین کے تعلق سے ایک جامع سروے کروانے کے اقدامات کر رہی ہے ۔ تاکہ ریاست میں اس سروے کی روشنی میں پائی جانے والی تنہا خواتین کی نشاندہی کے ذریعہ انہیں یکم اپریل سے پنشن (وظیفہ) کی اجرائی عمل میں لائی جاسکے ۔ وزیر پنچایت راج و دیہی ترقیات مسٹر جوبلی کرشنا راو نے اس بات کا انکشاف کیا اور اس سلسلہ میں موثر اقدامات کرتے ہوئے یکم اپریل سے تنہا خواتین کو پنشن کی فراہمی کو یقینی بنانے کی متعلقہ عہدیداروں کو وزیر موصوف نے ضروری ہدایات دی ہیں۔ وزیر موصوف نے آئندہ سال کے لئے محکمہ پنچایت راج دیہی ترقیات کے لئے درکار بجٹ رقومات کی تجاویز پر متعلقہ اعلی عہدیداروں کے ساتھ ایک اہم جائزہ اجلاس طلب کیا ۔ باوثوق سرکاری ذرائع نے یہ بات کہی اور بتایا کہ تقریباً دو لاکھ تنہا زندگی گزار نے والی خواتین کو پنشن فراہم کرنے 24 کروڑ روپئے درکار رہنے سے متعلق تخمینہ عہدیداروں کی جانب سے مرتب کرکے وزیر موصوف کو پیش کیا ہے ۔ تخمینہ عہدیداروںکی جانب سے مرتب کر کے وزیر موصوف کو پیش کیا ہے ۔ وزیر موصوف نے تمام عہدیداروں کو مشورہ دیا کہ ضلع واری اساس پر مکمل معلومات اکھٹا کر کے تنہا زندگی گزار نے والی خواتین کی نشاندہی کر کے صحیح اعداد و شمار تیار کریں ۔ وزیر پنچایت راج نے اس موقعہ پر عہدیداروں سے دیہی علاقوں کے لئے سڑکوں کی تعمیر سہولتیں فراہم نہیں ہیں ۔ لہذا ان مواضعات تک سڑکوں کی تعمیر پر توجہ دینے کی عہدیداروں کو ہدایات دیں اور کہا کہ 500 آبادی والے ایس سی کالونیوں اور قبائیلی طبقات کے تانڈوں تک سڑکوں کی تعمیر پر اولین ترجیح دی جانی چاہئے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT