Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ میں سردی کی شدید لہر جاری ، مزید اضافہ کا اندیشہ

تلنگانہ میں سردی کی شدید لہر جاری ، مزید اضافہ کا اندیشہ

حیدرآباد کا درجہ حرارت 11.2 ، عادل آباد سرد ترین مقام ، رات کے اوقات میں سڑکیں سنسان

حیدرآباد۔ 27 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ریاست تلنگانہ گزشتہ دو دن سے سخت ترین سردی کی گرفت میں ہے جس کے نتیجہ میں درجہ حرارت میں اوسطاً 5 تا 6 ڈگری سیلسیس کی اچانک کمی واقع ہوئی ہے۔ شدید سردی کی لہر کے سبب دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں رات کے ابتدائی اوقات سے ہی ٹریفک کی آمدورفت میں قابل لحاظ کمی کے ساتھ اکثر مصروف ترین سنسان نظر آرہی ہیں، بالخصوص سڑکوں پر راتیں گذارنے والے دیگر افراد اور گداگروں کو سخت دشواریوں کا سامنا ہے جو اکثر مقامات پر رات دیر گئے سردی سے بچنے کیلئے سڑکوں کے کنارے آگ تاپتے دیکھے جارہے ہیں۔ اس دوران دونوں شہروں گرم ملبوسات کی فروخت میں بھی زبردست اضافہ ہوا ہے۔ اکثر مقامات پر عوام کو سوئٹرس، اونی ٹوپیاں اور دستانے خریدتے ہوئے دیکھا گیا۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ حیدرآباد اور عادل آباد صرف دو دن کے دوران اقل ترین درجہ حرارت میں اچانک 5 ڈگری سیلسیس کی کمی واقع ہوئی جس کے ساتھ حیدرآباد کا درجہ حرارت 11.2 اور عادل آباد کا اقل ترین درجہ حرارت 4.2 ڈگری سیلسیس تک گھٹ گیا۔ اس طرح ضلع عادل آباد نہ صرف تلنگانہ بلکہ دونوں تلگو ریاستوں کا انتہائی سرد ترین مقام رہا۔ میدک کا اقل ترین درجہ حرارت 9.7 ڈگری سیلسیس درج کیا گیا۔ ماہرین موسمیات نے خبردار کیا ہے کہ سال نو کے آغاز کے بعد بھی شدید سردی کی لہر دو ، تین دن جاری رہے گی۔ شہریوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ سردی کی لہر سے بچنے کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ محکمہ موسمیات کے عہدیداروں نے پیش قیاسی کی ہے کہ تلنگانہ کے اکثر اضلاع میں سردی کی لہر بدستور جاری رہے گی۔جس میں جنوری کے پہلے ہفتہ کے بعد ہی کمی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT