Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ میں عالمی میڈیکل ٹیکنالوجی کمپنیوں کو سرمایہ کاری کی ترغیب

تلنگانہ میں عالمی میڈیکل ٹیکنالوجی کمپنیوں کو سرمایہ کاری کی ترغیب

امریکی شہر منی پولس میں میڈیکل ٹیکنالوجی کانفرنس ، وزیر آئی ٹی کے تارک راما راؤ کا خطاب
حیدرآباد۔ 20 اکتوبر (سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ کی ترقی کیلئے میڈیکل ٹیکنالوجی کے حصول کو یقینی بنانے وزیر صنعت کے ٹی راما راؤ نے آج عالمی میڈیکل ٹیکنالوجی صنعتوں کو تلنگانہ میں سرمایہ کاری کیلئے مدعو کیا۔ انہوں نے اس سلسلے میں کہا کہ تلنگانہ ریاست ان میڈیکل صنعتوں کے لئے ایک حکمت عملی پر مبنی مقام ثابت ہوگی اور یہاں پر کئی مواقع حاصل ہوں گے۔ وہ امریکی ریاست منی سوٹا کے شہر منی پولس میں منعقدہ دُنیا کے سب سے پُروقار میڈیکل ٹیکنالوجی کانفرنس میں سے ایک “AdvaMed 2016” سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کو ترقی دینے کیلئے وہ امریکہ کا دورہ کررہے ہیں۔ ان کے اس دورہ کا اصل مقصد فارما، میڈیکل اور ہیلتھ کیر شعبوں میں پرکشش سرمایہ کاری کو ترغیب دینا ہے۔ ریاستی حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ وزیر صنعت نے میڈ ٹیک کمپنیوں کو ہندوستان میں پائے جانے والے مواقع سے واقف کرایا اور خاص کر تلنگانہ میں ان صنعتوں کی قیام و ترقی کیلئے تلنگانہ حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی سہولتوں کا ذکر بھی کیا۔ تارک راما راؤ نے کہا کہ ہم پہلے مرحلے میں تقریباً 250 ایکر پر ایک میڈیکل ڈیوائسیس پارک کو فروغ دے رہے ہیں۔ دوسرے مرحلے میں ایک ہزار ایکر پر اسی طرح کے پارک کو ترقی دی جائے گی جو دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا پارک ہوگا جہاں پر اختراعی اقدامات کے ساتھ آر اینڈ ڈی اور مینوفیکچرنگ یونٹس قائم کئے جائیں گے، ان کے ساتھ فارماسٹی بھی قائم کی جارہی ہے جو 15000 ایکر پر محیط ہوگی ۔ اس وقت بائیو ٹیک پارک ، Genome Valley موجود ہے جو کسی بھی میڈ ڈیوائسیس کمپنی کیلئے نہایت ہی موزوں ایکو سسٹم دستیاب ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ تلنگانہ میں دو ہندسی پیداوار کی شرح میں اضافہ ہوا ہے اور صنعت دوست پالیسی متعارف کرانے کے بعد یہاں پر اب تک 2,500 صنعتی یونٹس قائم ہوئی ہیں۔ انہوں نے احساس ظاہر کیا کہ تلنگانہ اور حیدرآباد کے تعلق سے اب تک کئی سروے کئے گئے ہیں ۔مرسر سروے نے حیدرآباد اور تلنگانہ کو مختلف شعبوں میں سرفہرست ہونے کا درجہ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد شہر دنیا کی سب سے بڑی کمپنیوں کا مرکز بن چکا ہے جہاں گوگل ، مائیکرو سافٹ، فیس بُک جیسی کمپنیاں کام کررہی ہیں۔ تلنگانہ میں ورک فورس کی کوئی کمی نہیں ہے۔ ہندوستان اپنے میڈیکل آلات کا 80% حصہ برآمدات کے ذریعہ پورا کرتا ہے۔ میڈیکل ڈیوائسیس سیکٹر 6.3 بلین امریکی ڈالرس سے قائم کیا جائے گا۔ ملک کی 29 ویں ریاست کے طور پر تلنگانہ میں ترقی کے کئی مواقع پیدا ہوئے ہیں۔ کے ٹی راما راؤ نے “AdvaMed 2016” کے پلینری سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل جیوگرافک وغیرہ نے حیدرآباد اور تلنگانہ کو صنعتوں کے قیام کیلئے اہم علاقہ قرار دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT