Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں عہدیداروں کی قلت پر قابو پانے کی مساعی

تلنگانہ میں عہدیداروں کی قلت پر قابو پانے کی مساعی

ڈپٹی کلکٹرس کو اسپیشل گریڈ ڈپٹی کلکٹرس کے عہدوں پر ترقی کی تجویز
حیدرآباد۔16 اکتوبر (سیاست نیوز) نئی ریاست تلنگانہ کا قیام عمل میں آنے کے بعد ریاست میں عہدیداروں کا مسئلہ درپیش ہے۔ ہر محکمہ میں عہدیداروں اور ملازمین کی کمی ہے اور حکومت اس مسئلہ سے نمٹنے کیلئے ملازمین کے راست تقررات کیلئے تلنگانہ اسٹیٹ پبلک سرویس کمیشن کو ذمہ داری دی ہے۔ علاوہ ازیں محکمہ جاتی عہدیداروں کو ترقیوں کے ذریعہ اعلیٰ عہدوں کو پر کرنے کے اقدامات کررہی ہے۔ اسی طرح ریاستی محکمہ مال میں بعض زمروں کے عہدیداروں کی کمی ایک طویل عرصہ سے جاری ہے لیکن ناگزیر وجوہات سے تقررات نہیں کئے جاسکے، لیکن اب جبکہ نئے 21 اضلاع کی تشکیل عمل میں آئی ہے، محکمہ مال میں عہدیداروں کی زبردست کمی ہے، لہذا حکومت اب تلنگانہ میں خدمات انجام دینے والے 80 ڈپٹی کلکٹروں کو اسپیشل گریڈ ڈپٹی کلکٹر عہدوں پر ترقی دیتے ہوئے بعض اعلیٰ عہدوں پر ان اسپیشل ڈپٹی کلکٹروں کو تعینات کرنے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے۔ فی الوقت ریاست میں 80 اسپیشل ڈپٹی کلکٹرس کی جائیدادیں مخلوعہ ہیں لیکن حکومت نے ان عہدوں پر تقررات عمل میں لانے سے متعلق سنجیدگی سے غور کررہی ہے اور حکومت نے بھی اسپیشل ڈپٹی کلکٹروں کے عہدوں پر تقررات عمل میں لانے سے اتفاق کیا ہے اور حکومت کے اس اتفاق کے بعد متعلقہ اعلیٰ عہدیداروں نے تلنگانہ میں خدمات انجام دینے والے 157 ڈپٹی کلکٹرس (آر ڈی او رتبہ) کی سالانہ خفیہ رپورٹس طلب کرتے ہوئے ان رپورٹس پر مبنی مکمل تفصیلات چیف کمشنر لینڈ ایڈمنسٹریشن (سی سی ایل اے) اور چیف سیکریٹری حکومت تلنگانہ ڈاکٹر راجیو شرما اور پرنسپال سیکریٹری محکمہ ریوینیو کو پیش کیا ہے۔ ان 157 ڈپٹی کلکٹرس میں 22 پی ڈی سیز کے ساتھ ساتھ 135 ترقی پائے ہوئے ڈپٹی کلکٹرس کے نام شامل کئے گئے ہیں۔ مذکورہ 157 ڈپٹی کلکٹروں کے منجملہ 21 پی ڈی سیز اور 59 ترقی کے ذریعہ ڈپٹی کلکٹرس بننے والے عہدیداروں کو اسپیشل گریڈ ڈپٹی کلکٹروں کی جائیدادوں پر ترقی دیتے ہوئے انہیں بعض اعلیٰ عہدوں پر تعینات کرنے کیلئے حکومت اقدامات کررہی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ ایک دو دن میں ان ڈپٹی کلکٹروں کو اسپیشل گریڈ ڈپٹی کلکٹرس کے عہدوں پر ترقی دیتے ہوئے احکامات جاری کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT