Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں قبائیلیوں کے لیے علحدہ ضلع تشکیل دینے کا مطالبہ

تلنگانہ میں قبائیلیوں کے لیے علحدہ ضلع تشکیل دینے کا مطالبہ

سی پی آئی ایم ایل نیو ڈیموکریسی کے قائدین وینکٹیشور راؤ اور دیگر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : نئے اضلاع کی تشکیل میں تلنگانہ کے قبائلی طبقات کا خاص خیال رکھتے ہوئے قبائیلیوں کے لیے ایک علحدہ ضلع کی تشکیل عمل میں لانے کا سی پی آئی ایم ایل نیو ڈیموکریسی نے ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا ۔ آج یہاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اسٹیٹ جنرل سکریٹری سی پی آئی ایم نیو ڈیموکریسی وینکٹیشورا راؤ نے کہا کہ قبائیلیوں کو ان کے حقوق کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے قبائیلیوں کے لیے علحدہ ضلع کی تشکیل ضروری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عادل آباد ، کھمم اور ورنگل میں قبائیلوں کی اکثریت پائی جاتی ہے ۔ لہذا حکومت تلنگانہ کو چاہئے کہ وہ مذکورہ اضلاع کے قبائیلیوں کے ساتھ انصاف کرے ۔ گوردھن ریڈی اسٹیٹ سکریٹریٹ رکن سی پی آئی ایم ایل نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ عام آبادیوں کو قبائیلیوں سے ملا کر نئے ضلع کی تشکیل سے قبائلی طبقات کے حقوق کو نقصان پہنچنے کا خدشہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی قبائلی آبادیوں کو تقسیم کیا گیا تھا جس کا خمیازہ قبائلی طبقات اب تک بھگت رہے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ نئے ضلع کی تشکیل ایک بہترین موقع ہے جس کے ذریعہ ہم صدیوں سے نظر انداز کیے جانے والے قبائلی طبقات کو جمہوری حقوق فراہم کرسکتے ہیں ۔ سندھیارانی نے کہا کہ نئے اضلاع کی تشکیل کے لیے جو طریقہ کار حکومت تلنگانہ اپنا رہی ہے وہ شک کے دائرے میں ہے ۔ اے راما راؤ ، ایم سرینواس بھی اس موقع پر موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT