Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں وسط مدتی انتخابات کے اشارے: کانگریس

تلنگانہ میں وسط مدتی انتخابات کے اشارے: کانگریس

حیدرآباد 14 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ کانگریس نے بجٹ میں ناممکن وعدوں کے ذریعہ ریاست کے عوام کو لُبھانے کا الزام عائد کرتے ہوئے چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ پر شدید تنقید کی۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی نے آج ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ حکومت نے بجٹ کے ذریعہ پسماندہ طبقات کو ’’سبز باغ‘‘ دکھانے کا الزام عائد کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ بجٹ 2018 ء کے ذریعہ تلنگانہ میں وسط مدتی انتخابات کا اشارہ دیا گیا ہے۔ ٹی آر ایس حکومت وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے میں ناکام رہی۔ اسی طرح ایس ٹی طبقات سے کیا گیا وعدہ بھی پورا نہیں کیا گیا۔ دلتوں کو تین ایکر اراضی فراہم کرنے میں حکومت ناکام ہوگئی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اِن تمام طبقات میں حکومت کے خلاف ناراضگی پائی جاتی ہے۔ اسی لئے چیف منسٹر نے بی سی طبقات کی تائید حاصل کرنے بی سی طبقات کا سہارا لیا۔ اُنھوں نے کہاکہ ٹی آر ایس کی 33 ماہ کی حکومت بالکلیہ غیر کارکرد رہی۔ ریاستی وزیر آبپاشی ہریش راؤ گھریلو شرح پیداوار سے واقف نہیں ہیں اور ریاستی حکومت مرکز کو صرف اعداد و شمار پیش کرتی ہے اور مرکزی حکومت اِس کا تعین کرتی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ٹی آر ایس حکومت نے غلط اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے مرکز کو گمراہ کیا ہے۔ اتم کمار ریڈی نے کہاکہ ٹی آر ایس حکومت نے کل پیش کردہ بجٹ 2017-18 ء میں مختلف طبقات کے لئے جن مراعات کا اعلان کیا ہے، اُس سے صاف اشارہ ملتا ہے کہ ریاست 2018 ء میں وسط مدتی انتخابات کی طرف گامزن ہے۔ اگر ٹی آر ایس حکومت خود 2018 ء میں انتخابات چاہتی ہے تو پھر کانگریس بھی جب کبھی یہ انتخابات منعقد ہوں سامنا کرنے کے لئے تیار ہے۔

TOPPOPULARRECENT