Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں کل بڑے پیمانہ پر ہریتا ہارم پروگرام

تلنگانہ میں کل بڑے پیمانہ پر ہریتا ہارم پروگرام

40 کروڑ پودے لگانے کا منصوبہ ، عوام سے سرگرم حصہ لینے پربھاکر کی اپیل
حیدرآباد۔10 جولائی (سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹریہ سمیتی نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو ترقی کے سلسلہ میں شہنشاہ اشوک کی طرح فکر رکھتے ہیں اور ان کا ہر قدم انقلابی نوعیت کا ہوتا ہے۔ گزشتہ تین برسوں میں تلنگانہ ریاست کی ہمہ جہتی ترقی کے لیے کے سی آر نے جو اقدامات کئے ہیں اس کی مثال ملک کی کوئی اور ریاست پیش نہیں کرسکتی۔ ملک میں تلنگانہ ہمہ جہتی کے زمرے میں سرفہرست ریاست کا مقام حاصل کرچکا ہے۔ پارٹی کے رکن قانون ساز کونسل کے پربھاکر نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر نے ریاست میں 40 کروڑ پودے لگانے کا نشانہ مقرر کیا ہے۔ اس سلسلہ میں 12 جولائی کو ہریتا ہارم پروگرام کا ریاست بھر میں آغاز ہوگا۔ پربھاکر نے کہا کہ ریاست کے ہر شہری کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس پروگرام میں حصہ لیتے ہوئے کامیاب بنائے۔ انہوں نے کہا کہ 70 لاکھ سے زائد پارٹی رکنیت کی تکمیل کرتے ہوئے ٹی آر ایس ہندوستان کی سب سے بڑی پارٹی کا موقف حاصل کرچکی ہے۔ انہوں نے اپوزیشن پر الزام عائد کیا کہ وہ ترقیاتی اقدامات کی ستائش کے بغیر تنقید کے ذریعہ رکاوٹ پیدا کرنا چاہتی ہیں۔ انہوں نے کانگریس قائدین اور جے اے سی کے صدرنشین کودنڈارام کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ بے بنیاد الزامات کے ذریعہ عوام میں الجھن پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ اپوزیشن کی ذمہ داری ہے کہ وہ تنقیدوں کے بجائے ترقیاتی پروگراموں میں تعاون کریں۔ پربھاکر نے کہا کہ عوام اچھی طرح جانتے ہیں کہ حکومت پر کی جارہی الزام تراشی کا کوئی ثبوت نہیں ہے۔ کودنڈارام کا عوام میں کافی احترام تھا لیکن انہوں نے جب سے حکومت کے خلاف مہم کا آغاز کیا ہے وہ عوام کے دلوں سے اترچکے ہیں۔ پربھاکر نے کہا کہ کوئی بھی اسمبلی حلقہ ایسا نہیں جہاں کے غریب اور کمزور طبقات حکومت کی اسکیمات سے مستفید نہ ہوں۔ چیف منسٹر نے بے سہارا غریبوں کے لیے ڈبل بیڈروم مکانات کی اسکیم متعارف کی ہے اور ہر اسمبلی حلقہ میں یہ مکانات تعمیر کئے جائیں۔ ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیر کے ذریعہ غریبوں کی عزت نفس میں اضافہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دلت خاندانوں میں ابھی تک 10 ہزار ایکڑ اراضی تقسیم کی گئی جو ایک کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ ریاست کے قیام کے بعد سے حکومت نے آبپاشی پراجیکٹ کی تکمیل پر خصوصی توجہ مرکوز کی ہے لیکن اپوزیشن جماعتیں پراجیکٹس کی تکمیل کی راہ میں رکاوٹ پیدا کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کلواکرتی لفٹ ایریگیشن پراجیکٹ کی مخالفت کرنا کانگریس کے رکن اسمبلی ومشی چند ریڈی کے لیے مناسب نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر نے عوام سے جو وعدے کیئے ہیں ان کی تکمیل بہرصورت کی جائے گی اور سنہرے تلنگانہ کی تشکیل کے سی آر کا اہم مقصد ہے۔

TOPPOPULARRECENT