Friday , June 23 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں 2019 انتخابات کے بعد بی جے پی کا اقتدار یقینی

تلنگانہ میں 2019 انتخابات کے بعد بی جے پی کا اقتدار یقینی

لوک سبھا حلقہ حیدرآباد پر نظر ، حکمت عملی کے ذریعہ پارٹی کو مضبوط بنانے مہم : ڈاکٹر لکشمن
حیدرآباد ۔ 20 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : صدر تلنگانہ بی جے پی ڈاکٹر کے لکشمن نے کہا کہ آئندہ انتخابات میں بی جے پی اپنی مرتب کردہ حکمت عملی کے ذریعہ ریاست تلنگانہ میں اقتدار حاصل کرنے کی اپنی ممکنہ کوشش کرے گی اور اسی حکمت عملی کے ایک حصہ کے طور پر بی جے پی نے تلنگانہ کے 17 لوک سبھا حلقہ جات کے منجملہ اب تک ہی 14 حلقہ جات لوک سبھا میں یوتھ سطح کے پارٹی قائدین وکارکنوں کے ساتھ اجلاس منعقد کئے جاچکے ہیں اور ان اجلاسوں میں مرکزی وزراء اور مرکزی اہم قائدین بی جے پی نے شرکت کیے اور اب ضلع نلگنڈہ میں قومی صدر بی جے پی مسٹر امیت شاہ اپنے 22 تا 24 مئی سہ روزہ دورہ نلگنڈہ ( ریاست تلنگانہ ) کے موقعہ پر لوک سبھا حلقہ نلگنڈہ کے یوتھ سطح کی بی جے پی کمیٹیوں کے عہدیداروں سے منعقد کئے جانے والے ایک اہم اجلاس سے خطاب کریں گے اور پھر 24 مئی کی شام میں نلگنڈہ سے حیدرآباد واپسی کے فوری بعد حلقہ لوک سبھا حیدرآباد کے مراکز رائے دہی ( پولنگ بوتھس ) سطح کی بی جے پی کمیٹی عہدیداروں کے ساتھ منعقد کیے جانے والے اجلاس سے مسٹر امیت شاہ مخاطب کریں گے ۔ ڈاکٹر لکشمن نے اپنی اس توقع کا اظہار کیا کہ زائد از دیڑھ سال کی مدت کے دوران بی جے پی کو گھر گھر پہونچایا جائے گا اور اپنی جامع مرتب کردہ حکمت عملی کے ذریعہ تمام طبقات کے ووٹ حاصل کر کے بہر صورت ریاست تلنگانہ میں بی جے پی کو برسر اقتدار لانے کی ہر طریقہ سے کوشش کی جائے گی ۔ آج یہاں صحیفہ نگاروں کے ساتھ قومی صدر بی جے پی مسٹر امیت شاہ کے دورہ تلنگانہ (  بالخصوص نلگنڈہ ) کے سلسلہ میں تبادلہ خیال کرنے کے دوران ڈاکٹر لکشمن نے صحیفہ نگاروں کے اس سوال پر کہ آیا انتخابات کے موقعہ پر ٹی آر ایس و بی جے پی کے مابین انتخابی مفاہمت یقینی ہوگی ؟ جواب دیتے ہوئے صدر تلنگانہ بی جے پی نے ان قیاس آرائیوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ تمام صرف افواہوں کے سواء کچھ اور نہیں ہے ۔ اس سوال پر کہ آیا مسٹر امیت شاہ کے دورہ تلنگانہ کے موقعہ پر کوئی اہم قائدین کی بی  جے پی میں شمولیت ہوگی ۔ ڈاکٹر لکشمن نے اس سوال کا بھی نفی میں جواب دیتے ہوئے کہا کہ ابھی تک تو ایسا کوئی پروگرام نہیں ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ بی جے پی ریاست میں اقتدار حاصل کرنے کے لیے وزیراعظم مسٹر نریندر مودی کے پروگراموں و پالیسیوں کے ساتھ ساتھ ریاست میں ٹی آر ایس زیر قیادت تلنگانہ حکومت کی ناکامیوں سے عوام کو واقف کرواتے ہوئے بی جے پی کے تعلق سے عوامی تائید و حمایت بلکہ بھر پور اعتماد حاصل کیا جائے گا ۔ ڈاکٹر لکشمن نے مزید بتایا کہ تلنگانہ بی جے پی نے ممتاز ماہرین تعلیم ، سماجی قائدین ، دانشور اصحاب وغیرہ پر مشتمل 8000 اصحاب کا کور گروپ تشکیل دیا گیا ہے اور اسی گروپ کے ہر ایک فرد کا کام یہی ہوگا کہ وہ ہر روز اپنے الاٹ کردہ بوتھ ( مرکز رائے دہی ) کے تحت عوام سے ملاقات کر کے مرکزی بی جے پی حکومت کی کامیاب پالیسیوں و پروگراموں اور ٹی آر ایس حکومت کی ناکامیوں سے واقف کروانا ہوگا ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT