Thursday , July 27 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ وقف بورڈ کا /11 مارچ کو پہلا اجلاس

تلنگانہ وقف بورڈ کا /11 مارچ کو پہلا اجلاس

اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے بشمول مختلف اہم فیصلوں کا امکان
حیدرآباد۔ 7 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ وقف بورڈ کا پہلا اجلاس ہفتہ 11 مارچ کو حج ہاؤز نامپلی میں منعقد ہوگا جس میں کئی اہم فیصلے کئے جاسکتے ہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ جناب محمد سلیم کی صدارت میں یہ پہلا اجلاس ہے جس کے ایجنڈہ کو قطعیت دی جارہی ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے بتایا کہ اجلاس میں حالیہ عرصہ میں عہدیداروں کی جانب سے کئے گئے فیصلوں کا جائزہ لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کے قیام کی سرگرمیوں کے آغاز کے بعد عہدیداروں کی جانب سے بعض اہم فیصلے کئے گئے، اس بارے میں انہیں مختلف گوشوں سے اطلاعات ملی ہیں۔ بورڈ ضرورت پڑنے پر ایسے تمام فیصلوں پر نظرثانی کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کی جانب سے پہلے اجلاس میں صدرنشین کو اختیارات تفویض کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں اہم اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے ارکان سے تجاویز حاصل کی جائیں گی۔ جناب محمد سلیم نے کہا کہ اوقاف کی ہر ایک انچ اراضی کا تحفظ وہ اپنی ذمہ داری سمجھتے ہیں۔ انہیں یقین ہے کہ بورڈ کے تمام ارکان کا انہیں تعاون حاصل رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ ضلع کلکٹرس سے ربط قائم کرتے ہوئے ضلع میں موجود کوآرڈینیشن کمیٹی کو متحرک کرنے کی خواہش کی جائے گی۔ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے ہر ضلع میں ضلع کلکٹر کی صدارت میں کوآرڈینیشن کمیٹی موجود ہے جس میں پولیس اور دیگر محکمہ جات کے عہدیدار شامل ہیں۔ اگر ان کمیٹیوں کو متحرک کیا گیا تو اوقافی جائیدادوں کا تحفظ کرنے میں مدد ملے گی۔ عام طور پر وقف بورڈ کا عملہ اختیارات کی کمی کے باعث جائیدادوں کے تحفظ سے قاصر ہے۔ اگر ضلع کلکٹر، پولیس، ریوینیو اور دیگر محکمہ جات بورڈ سے تعاون کریں تو ناجائز قبضوں کی برخاستگی میں مدد ملے گی۔ جناب محمد سلیم نے کہا کہ عدالتوں میں زیردوران اوقافی جائیدادوں کے مقدمات کی موثر پیروی کیلئے اسٹانڈنگ کونسلس کا بہت جلد اجلاس طلب کیا جائے گا۔ تمام عدالتوں میں زیردوران اوقافی جائیدادوں کی تفصیلات اور ان کا موقف جاننے کی کوشش کی جائے گی۔ جناب محمد سلیم نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر اسٹانڈنگ کونسلس کی تعداد میں اضافہ اور تبدیلی کا فیصلہ بھی بورڈ کرسکتا ہے۔ وقف بورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے کے لئے کئی اصلاحات کو روبہ عمل لانے کا حوالہ دیتے ہوئے جناب محمد سلیم نے کہا کہ وقف بورڈ سے رجوع ہونے والا کوئی بھی شخص مایوس واپس نہیں ہونا چاہئے اور اس کی شکایت پر کارروائی کرنا عہدیداروں کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ عوام کی جانب سے ملنے والی شکایات اور نمائندگیوں پر کارروائی میں کوئی تساہل نہ برتیں۔ اسی دوران اقلیتی فینانس کارپوریشن کے صدرنشین سید اکبر حسین نے آج وقف بورڈ پہنچ کر جناب محمد سلیم سے ملاقات کی اور انہیں مبارکباد پیش کی۔ ان کے ہمراہ گریٹر حیدرآباد ٹی آر ایس کے قائد محمد اعظم علی خرم اور دیگر موجود تھے۔ ان قائدین نے اُمید ظاہر کی کہ جناب محمد سلیم نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلے میں ٹھوس اقدامات کریں گے۔ شہر اور اضلاع سے تعلق رکھنے والے کئی مذہبی، سماجی اور سیاسی شخصیتوں نے حج ہاؤز پہنچ کر محمد سلیم کو مبارکباد پیش کی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT