Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ وقف بورڈ کو تنازعات سے پاک رکھنے کا مشورہ

تلنگانہ وقف بورڈ کو تنازعات سے پاک رکھنے کا مشورہ

اجلاس سے قبل حکمت عملی ، ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کا صدر نشین و نامزد ارکان کے ساتھ اجلاس
حیدرآباد۔7اپریل (سیاست نیوز) حکومت نے تلنگانہ وقف بورڈ کو تنازعات سے پاک رکھنے کے لیے 10 اپریل کے اجلاس سے قبل حکمت عملی تیار کی ہے۔ بورڈ کے 11 مارچ کو منعقدہ پہلے اجلاس میں تنازعات کے سبب حکومت کی نیک نامی متاثر ہوئی تھی۔ دوسرے اجلاس میں اس طرح کی کسی بھی صورتحال کے تدارک کے لیے ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے آج صدرنشین وقف بورڈ اور حکومت کے نامزد ارکان کا اجلاس طلب کیا۔ اجلاس میں صدرنشین محمد سلیم کے علاوہ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل، چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ ایم اے منان، بورڈ کے ارکان صوفیہ بیگم، ملک معتصم خان، وحید احمد، نثار حسین حیدر آغا اور دوسروں نے شرکت کی۔ بتایا جاتا ہے کہ اس اجلاس میں پیر کے اجلاس کے ایجنڈے پر غور کیا گیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے صدرنشین اور ارکان سے خواہش کی کہ وہ باہمی تال میل کے ساتھ کام کریں تاکہ حکومت کی نیک نامی متاثر نہ ہو۔ بورڈ میں کوئی بھی ایسا فیصلہ نہ لیا جائے جو تنازعہ کا سبب بنے اور حکومت کے لیے مسائل میں اضافہ ہو۔ ارکان کی اکثریت چوں کہ پہلی مرتبہ بورڈ کے لیے نامزد ہوئی ہے لہٰذا انہیں بورڈ کی کارکردگی اور ارکان کے اختیارات سے واقف کرایا گیا۔ ارکان کو بتایا گیا کہ وہ کس طرح ایجنڈے میں شامل امور کے بارے میں تفصیلات حاصل کرسکتے ہیں۔ کسی بھی تنازعہ سے بچنے کے لیے مشورہ دیا گیا کہ متنازعہ امور کو آئندہ اجلاس کے لیے ملتوی کردیا جائے اور غیر متنازعہ امور کی یکسوئی کی جائے۔ باوثوق ذرائع کے مطابق ارکان کو اس بات کے لیے پابند کیا گیا کہ وہ اجلاس کی روداد کے بارے میں میڈیا سے کوئی گفتگو نہ کریں اور رازداری برتی جائے۔ میڈیا سے بات کرنے کا اختیار صرف صدرنشین کو رہے گا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے گزشتہ اجلاس میں ارکان کے درمیان اختلاف اور متنازعہ فیصلے کے پس منظر میں خواہش کی کہ آپسی سوجھ بوجھ کے ساتھ وقف بورڈ کے امور انجام دیئے جائیں اور ہر رکن کے پیش نظر اوقافی جائیدادوں کا تحفظ ہو۔ حکومت نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے مقصد سے بورڈ تشکیل دیا ہے اور تمام ارکان کو اپنی ذمہ داری بخوبی نبھانی چاہئے۔ اجلاس میں وقف بورڈ کے عہدیداروں سے کہا گیا کہ وہ بورڈ کے ایجنڈے کو اجلاس سے ایک دن قبل تمام ارکان تک پہنچا دیں تاکہ وہ ان امور کا جائزہ لے کر اجلاس میں شرکت کریں۔ بتایا جاتا ہے کہ پیر کے اجلاس کے سلسلہ میں ارکان کو آج تک ایجنڈہ سربراہ نہیں کیا گیا۔ دلچسپ بات تو یہ ہے کہ وقف بورڈ کے حکام نے ایجنڈے کے تیاری اور اس میں شامل کئے جانے وا لے امور کے بارے میں سکریٹری اقلیتی بہبود کو بھی لا علم رکھا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ڈپٹی چیف منسٹر نے امید ظاہر کی کہ بورڈ اپنے قیام کے مقاصد کی تکمیل میں پوری سنجیدگی اور دیانتداری کے ساتھ کام کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT