Thursday , June 29 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ پبلک سرویس کے ذریعہ تقررات میں شفافیت کا اعتراف

تلنگانہ پبلک سرویس کے ذریعہ تقررات میں شفافیت کا اعتراف

کمیشن کو ڈیجیٹلائزڈ کرنے کا منصوبہ ، وزیر عمارات و شوارع ٹی ناگیشور راؤ کا بیان
حیدرآباد۔/24مارچ، ( سیاست نیوز) وزیر عمارات و شوارع ٹی ناگیشورراؤ نے کہا کہ تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ تقررات کا عمل مکمل شفافیت کے ساتھ کیا جارہا ہے۔ وقفہ سوالات کے دوران ٹی آر ایس رکن وی سرینواس گوڑ کے سوال پر ٹی ناگیشورراؤ نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے بعد تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کا قیام عمل میں آیا اور ابتداء میں گروپ I تا گروپ III امتحانات پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ منعقد کئے جاتے رہے لیکن چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے تمام تقررات کو پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ انجام دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام کارپوریشنوں اور اقامتی اسکولس کے اسٹاف کے تقررات بھی پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ انجام پائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ تقررات کا یہ عمل شفافیت پر مبنی ہوگا اور پبلک سرویس کمیشن اپنے صدرنشین چکرا پانی کی قیادت میں بہتر خدمات انجام دے رہا ہے۔ انہوں نے سوال کے تحریری جواب میں بتایا کہ 180ملازمین تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن میں برسر خدمت ہیں جن میں 110 مستقل اور 70 ملازمین آؤٹ سورسنگ پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔ حکومت نے 8 اگسٹ 2014 کو کمیشن تشکیل دیا جس میں صدرنشین کے علاوہ 10ارکان موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے پبلک سرویس کمیشن کو آؤٹ سورسنگ کی بنیاد پر 70 ملازمین کے تقرر کی اجازت دی ہے تاکہ کام کے بوجھ کو کم کیا جاسکے۔ ناگیشور راؤ نے کہا کہ پبلک سرویس کمیشن کی کارکردگی میں بہتری اور شفافیت کیلئے تقررات کے سارے عمل کو ڈیجیٹلائزڈ کرنے کا منصوبہ ہے۔ پبلک سرویس کمیشن میں سنٹر فار گڈ گورننس کے تعاون سے ای گورننس سسٹم متعارف کیا جائیگا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT