Saturday , May 27 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کا بجٹ بوگس ، ٹی آر ایس حکومت کا آخری بجٹ

تلنگانہ کا بجٹ بوگس ، ٹی آر ایس حکومت کا آخری بجٹ

تلگو دیشم ارکان کی معطلی خلاف دھوپ میں کھڑے ہونے کا انوکھا احتجاج ، ریونت ریڈی کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 13 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : تلگو دیشم کے رکن اسمبلی ریونت ریڈی نے بجٹ کو بوگس قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایٹالہ راجندر کی جانب سے پیش کیا گیا ٹی آر ایس حکومت کا آخری بجٹ ہونے کا دعویٰ کیا ۔ معطلی کے خلاف تلگو دیشم کے ارکان نے بجٹ پیش کرنے تک اسمبلی کے احاطہ میں دھوپ میں کھڑے ہو کر احتجاج کیا ۔ واضح رہے کہ بجٹ اجلاس کے اختتام تک تلگو دیشم کے ارکان اسمبلی ریونت ریڈی اور ایس وینکٹ ویریا کو اسمبلی سے معطل کردیا گیا ہے ۔ بجٹ پیش کرنے تک بطور احتجاج دونوں ارکان اسمبلی نے دھوپ میں کھڑے ہو کر اپنا احتجاج درج کرایا بعد ازاں میڈیا پوائنٹ پر صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے بوگس بجٹ پیش کیا ہے ۔ جو مخالف غریب عوام اور کارپوریٹ سیکٹر کی تائید میں پیش کیا گیا بجٹ ہے ۔ ریونت ریڈی نے طنزیہ ریمارکس کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر نے اپنی قیام گاہ کو بلڈ پروف بنانے کے لیے کروڑ روپئے خرچ کردئیے مگر افسوس کی بات ہے کہ بی سی طبقات کے بجٹ میں صرف معمولی اضافہ کیا گیا ہے ۔ اگر ایٹالہ راجندر کی جانب سے پیش کردہ بجٹ فاضل ہے تو کسانوں کے قرضہ جات معاف کیوں نہیں کئے گئے ۔ طلبہ کی فیس ری ایمبرسمنٹ بقایا جات کیوں جاری نہیں کئے گئے ۔ وعدے کے مطابق ایک لاکھ سرکاری ملازمتیں کیوں فراہم نہیں کی گئی وعدے کے مطابق ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیر کیوں نہیں کئے گئے ۔ دلت طبقات کو وعدے کے مطابق 3 ایکڑ اراضی کیوں نہیں دی گئی ۔ سرکاری ملازمین کے پی آر سی بقایا جات کیوں نہیں جاری کئے گئے ۔ چیف منسٹر نے اسمبلی جیسے قابل احترام مرکز سے وزیر فینانس کو جھوٹ بولنے کے لیے مجبور کیا ہے ۔ کسانوں کے مکمل قرضہ جات معاف کرنے کا حکومت سے مطالبہ کیا ۔ فیس ری ایمبرسمنٹ کے بقایا جات کے لیے بجٹ میں 4300 کروڑ روپئے مختص کرنا لازمی ہے ۔ لیکن تعجب ہے حکومت نے صرف 1900 کروڑ روپئے مختص کرتے ہوئے طلبہ کا مذاق اڑایا ہے ۔ ڈھائی لاکھ ڈبل بیڈ روم مکانات تعمیرکرنے کا وعدہ کیا گیا تاہم صرف 1400 ڈبل بیڈ روم مکانات ہی تعمیر کئے گئے ۔ دلتوں میں اراضی تقسیم کرنے کے وعدے کو نبھانے میں بھی حکومت پوری طرح ناکام ہوچکی ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت کا یہ آخری بجٹ ہے ۔ آئندہ سال حکومت قبل از عام انتخابات کرانے کا اس بجٹ کے ذریعہ اشارہ دے چکی ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT