Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کیلئے ایک اور الیکٹرانک کلسٹر کی منظوری

تلنگانہ کیلئے ایک اور الیکٹرانک کلسٹر کی منظوری

نوجوانوںکو روزگار فراہم ہوگا ۔ کے ٹی آر کا مرکز سے اظہار تشکر
حیدرآباد /4 اگست ( سیاست نیوز ) مرکزی حکومت نے تلنگانہ کیلئے الکٹرانک اشیا کی تیاری کیلئے ایک اور کلسٹر کی منظوری دی ہے ۔ 310 ایکر اراضی پر 437 کروڑ روپئے کے مصارف سے یہ کلسٹر قائم کیا جائے گا ۔ وزیر آئی ٹی کے ٹی آر نے مرکز سے اظہار تشکر کیا ہے ۔ مرکزی وزارت الکٹرانک و آئی ٹی ڈپارٹمنٹ نے تلنگانہ کو مزید ایک الکٹرانک اشیاء تیار کرنے کا پراجکٹ منظور کیا ہے۔ سکریٹری مرکزی محکمہ الکٹرانک و آئی ٹی اجئے کمار نے ریاستی حکومت کو مرکز کے فیصلے سے واقف کرایا ہے ۔ واضح رہے کہ چار دن قبل ہی تلنگانہ کو الکٹرانک اشیاء تیار کرنے ایک کلسٹر کی منظوری دی گئی تھی جس کو ضلع رنگاریڈی کے راوی ریال علاقے میں 600 ایکر اراضی پر قائم کیا جارہا ہے ۔ پہلے کلسٹر کی ترقی کیلئے 667 کروڑ روپئے منظور ہوئے ہیں دوسرا کلسٹربھی اس کے قریب میں قائم کیا جائے گا ۔ دوسرے کلسٹر کی منظوری دینے پر ریاستی وزیر صنعت و آئی ٹی کے ٹی آر نے مرکز سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ 1000 ایکڑ اراضی پر بڑا الکٹرانک اشیا تیار کرنے قائم کئے جانے والا کلسٹر تلنگانہ کی ترقی اور نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے معاون ثابت ہوگا ۔ علحدہ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد ریاست میں صنعتوں کے قیام اور سرمایہ کاری کو راغب کرنے انمول صنعتی پالیسی تیار کی گئی ہے جس سے مرکز بھی مطمئن ہے ۔ کئی خانگی و کارپوریٹ ادارے تلنگانہ میں سرمایہ کاری کرنے دلچسپی دکھا رہے ہیں ۔ صنعتوں کے قیام کیلئے سنگل ونڈو سسٹم تشکیل دیا گیا ہے ۔ کمپنیوں کے قیام اور سرمایہ کاری کیلئے ہر لحاظ سے حیدرآباد اور تلنگانہ پوری طرح محفوظ ہے ۔ کاروبار کیلئے مرکز نے تلنگانہ کو سرفہرست مقام عطا کیا ہے ۔ ٹی ایس آئی ٹی پالیسی سارے کیلئے مثالی نمونہ ثابت ہو رہی ہے ۔ ملک کی کئی ریاست تلنگانہ کی صنعتیں و آئی ٹی پالیسی سے متاثرین اور اپنے اپنے ریاستوں میں اس پر عمل آوری کیلئے تلنگانہ سے تعاون طلب کر رہی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT