Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کیلئے مزید ایک ہزار حج کوٹہ حاصل کرنے کی کوشش

تلنگانہ کیلئے مزید ایک ہزار حج کوٹہ حاصل کرنے کی کوشش

وزیر خارجہ سے نمائندگی: ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی‘ حافظ پیر شبیر احمد اور پروفیسر ایس اے شکور کا خطاب
حیدرآباد  24   جولائی  ( پریس نوٹ ) ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی  نے کہا ہے کہ حکومت تلنگانہ اس بات کی بھر پور کوشش  کررہی ہے کہ ریاست کے عازمین حج کے لئے مزید کم از کم ایک ہزار کا حج کوٹہ حاصل کیا جائے‘ اس سلسلہ میں انہو ں نے وزیر خارجہ شریمتی سشما سوراج کو ایک مکتوب تحریر کیا ہے اور ایک دو دن میں دہلی کا دورہ کرتے ہوئے اس تعلق سے موثر نمائندگی کریں گے۔  آج تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی کے زیر اہتمام جمیعتہ علمأ تلنگانہ و آندھرا پردیش کے اشتراک سے قدیم قطب شاہی مسجد خیریت آباد میںمنعقدہ عازمین حج کے آٹھویں تربیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے یہ اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سال ایران سے عازمین حج کی روانگی نہیں ہورہی ہے اور ان کا جو کوٹہ ہے اس میں سے 20ہزار کا کوٹہ ہندوستان کو مل جائے تو تلنگانہ کے عازمین حج کے لئے ایک ہزار کا کوٹہ حاصل کرنے کی کوشش  کی جارہی ہے ‘ ‘ جس سے ریاست کے مسلمانوں کو فائیدہ ہوگا۔ جناب محمود علی نے عازمین سے خواہش کی کہ وہ ریاست کی ترقی و خوش حالی اور مسلمانوں کی عزت و سربلندی  اور ان کے باہمی اتحاد کے لئے دعائیں کریں کہ ان کو ان کا کھویا ہوا مقام پھر سے مل جائے۔  انہو ںنے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ آج مسلمان مسلکوں اور فرقوں میں بٹ گئے ہیں حالانکہ ان کا خدا‘ ان کا دین اور ان کا رسول ایک ہے‘ اس کے بر عکس دوسری اقوام میں اتحاد ہے ۔آج مسلمان  کو دنیا بھر میں دہشت گردی سے جوڑا جارہا ہے : اس کا جواب ہم پیار محبت سے دیں۔حکومت تلنگانہ نے مکہ معظمہ میں حیدرآباد رباط کا مسئلہ حل کروایا ہے‘  گزشتہ سال 690حجاج کرام نے رباط میں قیام کیا تھا اور ان کو مفت غذا اور مفت لانڈری کی سہولت بھی حاصل تھی۔ اس بات کی کوشش کی جارہی ہے کہ آنے والے برسوں میں رباطوں میں ریاست کے تمام عازمین قیام کرسکیں گے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ مسلمانوں کے ہر معاملہ میں پیش رفت کررہے ہیںاور مسائیل کی یکسوئی اور مسلمانوں کی ترقی کے لئے کوششیں کررہے ہیں۔ مہمان عالم دین مولانا مفتی سلمان منصور پوری شیخ الحدیث  شاہی مدرسہ مراد آباد نے فضائیل و مناسک حج و عمرہ بیان کرتے ہوئے عازمین کو ضروری امور سے واقف کروایا اور کہا کہ عازمین حج صبر و تحمل اور ایثار کا مظاہرہ کرتے رہیں اور اپنی زندگی میں بھی اس پر عمل کرتے رہیں ‘ یہ سفر تربیت کا سفر ہے اور  سائنس و ٹیکنالوجی کی ترقی کے باوجود اس سفر میں مشقت کا ہونا لازمی ہے جس سے مفر نہیں‘  او ر جتنی مشقت ہوگی اتنا ہی ثواب ہوگا۔انہوںنے کہا کہ حج میں بے حجابی‘ گناہ اور جھگڑے سے پرہیز کرنا چاہئے یہ اللہ کا حکم ہے۔  طواف اور سعی جلد کرنے میں کمال نہیں ہے بلکہ ان کو مکمل طور پر ادا کرنے میں کمال ہے۔ صدر جمیعتہ علمأ تلنگانہ و آندھرا پردیش مولانا حافظ پیر شبیر احمد نے عازمین سے کہا کہ وہ حج کے پانچ دنوں میں صبرو تحمل سے کام لیں۔ انہوں نے کہا کہ روضہ نبوی ﷺ پر حاضری کے وقت یہ عہد کریں کہ وہ آئندہ سے نمازوں‘ سنتوں اور فرائض کا اہتمام کریں گے۔  اکابر علمأ کرام اس بات کا بڑا اہتمام کیا کرتے تھے۔  اسپیشل آفیسر تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے عازمین سے خواہش کی کہ وہ حرم شریف میں فوٹوز نہ لیں کیونکہ اس سے حج کی روح متاثر ہوتی ہے۔ انہو ں نے بتایا کہ اس سال عازمین کو سم کارڈ سعودی عرب میں پہنچنے کے بعد ہی دیئے جائیں گے‘ کیونکہ اس کے غلط استعمال کئے جانے کا اندیشہ رہتا ہے۔ مولانا نذیر احمد سبیلی نے آداب زیارت روضہ نبوی بیان کئے اور کہا کہ مدینہ منورہ میں درود و سلام کی کثرت رکھی جائے اور وہاں ادب و احترام کا مظاہرہ کیا جائے۔ مسٹر ٹرینر جناب خواجہ نصیر الدین نے سفر حج سے متعلق اہم امور بیان کئے۔  حافظ عبدالوہاب کی قرأت اور جناب محمد شاکر کی نعت شریف سے  اجتما ع شروع ہوا۔ جناب اشفاق علی حسامی نے احرام باندھنے کا طریقہ بتایا۔ اس موقعہ پر کارپوریٹر خیریت آباد شریمتی پی وجے ریڈی بھی زنانی حصہ میں موجود تھیں۔  جناب عرفان شریف اے ای او حج کمیٹی ‘ حافظ پیر خلیق احمد صابر نے انتظامات کی نگرانی کی۔

TOPPOPULARRECENT