Monday , April 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے اسکولس میں ڈیجیٹل نظام تعلیم روشناس

تلنگانہ کے اسکولس میں ڈیجیٹل نظام تعلیم روشناس

مرحلہ وار مکمل ڈیجیٹلائزیشن ، وقفہ سوالات میں وزیر تعلیم کڈیم سری ہری کا ادعا
حیدرآباد۔16ڈسمبر(سیاست نیوز) حکومت ریاست کے اسکولو ںمیں ڈیجیٹل نظام تعلیم روشناس کرواچکی ہے اور اس کا آغاز 16نومبر کو کیا جا چکا ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر و ریاستی وزیر تعلیم مسٹر کڈیم سری ہری نے وقفہ سوالات کے دوران کئے گئے ایک سوال کے جواب میں یہ بات بتائی ۔ انہوں نے بتایا کہ فوری طور پر ریاست کے 1552سرکاری اسکولوں میں ڈیجیٹل نظام تعلیم کو متعارف کروایا گیا ہے اور مرحلہ وار اساس پر 3472اسکولوں میں اس نظام کو رائج کیا جائے گا۔ مسٹر کڈیم سری ہری نے 6ویں تادہم جماعت تک ڈیجیٹل تعلیمی نصاب کی تیاری کے متعلق سوال پر مثبت جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ ڈیجیٹل نصاب کی تیاری کا عمل جاری ہے۔ اسی دوران جناب محمد علی شبیر قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ تاحال 131اردو میڈیم اسکول بند کئے جا چکے ہیں اور سرکاری اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کی عدم موجودگی کی شکایات عام ہیں ایسے ماحول میں حکومت ڈیجیٹل طرز تعلیم کے متعلق فیصلہ کر رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 85اسکول ایس بند ہوئے ہیں جن میں برقی سربراہی نہیں تھی اس صورتحال میں حکومت ڈیجیٹل نظام تعلیم پر کس طرح عمل آوری کر سکتی ہے؟ جناب محمد علی شبیر نے اردو میڈیم اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کی عدم موجودگی کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ کئی اسکولوں کی عمارتیں نہیں ہیں اور کئی اسکولوں میں اساتذہ کی درکار تعداد موجود نہیں ہے ان حالات میں ڈیجیٹل نظام تعلیم کس طرح فائدہ بخش ثابت ہوگا؟ ان کے ان سوالات پر مسٹر کڈیم سری ہری نے کہا کہ جن سرکاری اسکولوں میں سہولتیں موجود ہیں ان اسکولو ں میں ہی حکومت کی جانب سے ڈیجیٹل نظام تعلیم کو روشناس کروایا جا رہا ہے۔ مسٹر کڈیم سری ہری نے بتایا کہ ڈیجیٹل نظام تعلیم کو روشناس کروانے کیلئے حکومت اساتذہ کو خصوصی تربیت بھی فراہم کر رہی ہے۔ سرکاری اسکولوں کے طرز پر سرکاری جونیئر کالجس میں دوپہر کے کھانے کی اسکیم کی شروعات کے متعلق کئے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ مسئلہ حکومت کے زیر غور ہے اس پر تاحال کوئی قطعی فیصلہ نہیں کیا گیا۔وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ اس اسکیم کے روشناس کروائے جانے کی صورت میں 1لاکھ 73ہزار296طلبہ کو فائدہ حاصل ہوگا لیکن اس سلسلہ میں ابھی تک کوئی تخمینی لاگت نہیں لگائی گئی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT