Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ کے بے روزگاروں کی آواز دہلی تک پہونچ گئی ، کے سی آر کا پتلہ نذر آتش

تلنگانہ کے بے روزگاروں کی آواز دہلی تک پہونچ گئی ، کے سی آر کا پتلہ نذر آتش

حکومت کے رویہ کے خلاف دہلی میں زبردست احتجاج ، تلنگانہ بھون کا گھیراؤ ، اے آئی ایس ایف کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 22 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : تلنگانہ کے بے روزگار نوجوانوں کی آواز نے آج قومی دارالحکومت دہلی میں بھی گونج اٹھی ۔ ریاست تلنگانہ میں طلبہ برادری پر جاری عملاً نظر بند رویہ کے خلاف آج دہلی میں زبردست احتجاج کیا گیا ۔ بائیں بازو کی طلبہ تنظیم اے آئی ایس ایف نے تلنگانہ بھون کو نشانہ بناتے ہوئے اپنا شدید احتجاج درج کروایا اور تلنگانہ بھون کا گھیراؤ کرتے ہوئے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کا پتلہ نذر آتش کیا ایک طرف تلنگانہ میں بے روزگار اپنے دیرینہ مسئلہ روزگار کے حصول کے لیے احتجاج کررہے ہیں تو وہی حکومت طاقت کے بل پر صدائے احتجاج کو دبانے کی کوشش کررہی ہے ۔ اے آئی ایس ایف کے قومی صدر مسٹر ولی اللہ قادری کی قیادت میں طلبہ کی کثیر تعداد نے دہلی تلنگانہ بھون کا گھیراؤ کیا ۔ اس موقع پر سید ولی اللہ قادری نے کہا کہ روزگار کے مسئلہ پر جاری احتجاج کو کچلنے کی کوشش انتہائی افسوسناک عمل ہے ۔ انہوں نے چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ کو طلبہ کے ساتھ کھلواڑ پر سخت گیر نتائج کا انتباہ دیا ۔ اور کہا کہ حکومت کا رویہ اس کے زوال کی طرف اشارہ کررہا ہے ۔ انہوں نے طلبہ کو دھمکانے اور انہیں ہراساں کرنے کے خلاف حکومت تلنگانہ کو باور کیا اور کہا کہ حکومت کو طلبہ کی قربانیاں فراموش نہیں کرنی چاہئے چونکہ آج چندر شیکھر راؤ کا اقتدار طلبہ کی قربانیوں کا نتیجہ ہے اور اگر طلبہ چاہیں تو انہیں اقتدار سے بے دخل کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے طلبہ برادری کی ہمت افزائی کرتے ہوئے کہا کہ وہ متحد رہیں چونکہ طلبہ کا اتحاد اور جدوجہد نے تحریکوں کی شکل میں ریاستوں کے نقشہ بدل دے اور اب اس اتحاد و احتجاج سے کے سی آر کو سبق سکھانے کا وقت آگیا ہے ۔ انہوں نے حکومت کو انتباہ دیا اور کہا کہ حکومت چاہے کتنا بھی دباؤ ڈالے طلبہ کو خوف کا شکار نہیں کرسکتی ۔ انہوں نے چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کے سی آر وعدوں کو پورا کرنے میں بری طرح ناکام ہوگئے ہیں ۔ مسٹر ولی اللہ قادری نے کہا کہ تشکیل تلنگانہ کے بعد 4 افراد ہی خوشحال ہیں ۔ انہوں نے کے سی آر ، کویتا ، کے ٹی آر اور ہریش راؤ کو تلنگانہ کے خوش نصیب افراد قرار دیا ۔ اور کہا کہ ریاست کے قیام کے بعد سب سے زیادہ خوشحال یہ 4 افراد ہی ہیں ۔ بلکہ حقوق کے لیے طلبہ کو آج انہیں حالات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے جیسا کہ ریاست کی تشکیل سے قبل تحریک میں کیا گیا تھا ۔ قومی صدر اے آئی ایس ایف نے کہا کہ ریاست تلنگانہ میں وسیع پیمانے پر احتجاج اور تحریک کے لیے عنقریب لائحہ عمل تیار کیا جائے گا اور یہ تحریک حصول روزگار اور حقوق کو حاصل کرنے تک جاری رہے گی ۔ تلنگانہ بھون دہلی کے اس احتجاج میں قومی جنرل سکریٹری اے آئی ایس ایف مسٹر ویشواجیت کمار کے علاوہ قومی قائدین مہیش ترملائی ، ایم شاہ چوہان ، محمد عمران ، کرانتی و دیگر موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT