Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے ساتھ مرکزی حکومت کی ناانصافی :کویتا

تلنگانہ کے ساتھ مرکزی حکومت کی ناانصافی :کویتا

حیدرآباد۔ 22 ۔ فروری (سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹرا سمیتی کل 23 فروری سے شروع ہونے والے پارلیمنٹ بجٹ سیشن میں تلنگانہ کے ساتھ ناانصافیوں کے خلاف آواز اٹھائے گی۔ ریاست کی تشکیل کے بعد سے مرکز کی جانب سے جو رویہ اختیار کیا گیا، اس پر مرکز کی توجہ مبذول کرائی جائے گی۔ ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ کویتا نے بتایا کہ ریاست کو درپیش مختلف مسائل جیسے پراناہیتا چیوڑلہ پراجکٹ کو قومی پراجکٹ کا درجہ دینا، تلنگانہ میں ریلوے کوچ فیکٹری کا قیام ، سرکاری ملازمین کی عدم تقسیم، ہائیکورٹ کی تقسیم میں تاخیر جیسے مسائل پر ٹی آر ایس احتجاج درج کرائی گی۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کئی شعبوں میں تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی کا رویہ اختیار کئے ہوئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور متعلقہ وزراء سے بارہا نمائندگی کے باوجود تلنگانہ کے حقوق ادا نہیں کئے گئے ۔ کویتا نے کہاکہ گزشتہ بجٹ میں تلنگانہ اور آندھراپردیش کے ساتھ ناانصافی کی گئی۔ ان کا کہنا ہے کہ مرکز کو آئندہ سال کے بجٹ میں تلنگانہ کے ساتھ انصاف کرنا چاہئے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ آئندہ سال کا بجٹ تلنگانہ کی ترقی میں معاون ثابت ہوگا۔ کویتا نے کہا کہ عوامی مسائل پر ٹی آر ایس پارلیمنٹ میں اپوزیشن کا رول ادا کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں صرف ٹی آر ایس ہی اپوزیشن ہے جبکہ کانگریس اپوزیشن کا رول ادا کرنے میں ناکام ہوچکی ہے۔ پارلیمنٹ میں ٹی آر ایس کی حکمت عملی کو قطعیت دینے کیلئے اجلاس سے قبل ارکان پارلیمنٹ باہم مشاورت کریں گے۔ رکن پارلیمنٹ ونود کمار اور جتیندر ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ سے ناانصافیوں کے مسئلہ پر کسی بھی مفاہمت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

TOPPOPULARRECENT