Sunday , May 28 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے مسلمانوں کے ساتھ چیف منسٹر کے سی آر کی بے وفائی

تلنگانہ کے مسلمانوں کے ساتھ چیف منسٹر کے سی آر کی بے وفائی

تحفظات کا وعدہ وفا نہ کرسکے ، جگا ریڈی ترجمان کانگریس کمیٹی کا بیان
حیدرآباد ۔ 6 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے ترجمان و سابق گورنمنٹ وہپ جگا ریڈی نے کہا کہ 12 فیصد مسلم تحفظات کا وعدہ کرنے والے چیف منسٹر کے سی آر اقتدار حاصل ہونے کے بعد بے وفائی کرتے ہوئے مسلمانوں کی پیٹھ میں خنجر گھونپ رہے ہیں ۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جگا ریڈی نے چیف منسٹر کو دھوکہ باز قرار دیتے ہوئے کہا کہ وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کے بجائے حکومت ٹال مٹول کی پالیسی اپناتے ہوئے مسلمانوں کے جذبات سے کھلواڑ کررہی ہے ۔ کے سی آر نے اقتدار حاصل کرنے کے اندرون 4 ماہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ ڈھائی سال مکمل ہونے کے باوجود مسلمانوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا گیا ۔ مسلمانوں کو خود تحفظات فراہم کرنے کے بجائے اسمبلی میں قرار داد منظور کر کے مرکز کو روانہ کرنے کا اعلان کیا جارہا ہے ۔ جب کہ یہ ریاست کا معاملہ ہے ۔ ریاست میں بھی دیا جاسکتا ہے ۔ کانگریس نے مسلمانوں کو تعلیم اور ملازمتوں میں 4 فیصد تحفظات فراہم کیا ہے اس پر کامیابی سے عمل آوری ہورہی ہے ۔ کے سی آر قرار داد مرکز کو روانہ کرنے کا اعلان کررہے ہیں اور مرکزی وزیر شہری ترقیات وینکیا نائیڈو مسلم تحفظات کی مخالفت کررہے ہیں ۔ بی جے پی سے خفیہ سازباز کرنے والی ٹی آر ایس مسلمانوں کو دھوکہ دے رہی ہے جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے ۔ کانگریس پارٹی مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کے لیے ریاست میں بڑے پیمانے پر احتجاج منظم کرچکی ہے اور اسمبلی اور اسمبلی کے باہر مسلم تحفظات کے حق میں تائیدی مظاہرے کررہی ہے ۔ جگا ریڈی نے کہا کہ راون کے 10 سر تھے تاہم کے سی آر کے 100 سر ہیں جس سے وہ جھوٹ پہ جھوٹ بولے جارہے ہیں ۔ ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ سمن کو پروفیسر کودنڈا رام پر تنقید کرنے کی اوقات نہیں ہے ۔ کودنڈا رام کے سامنے سمن بچہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کی تحریک میں اہم رول ادا کرنے والے پروفیسر کودنڈا رام سے کے سی آر حکومت سیاسی انتقام لے رہی ہے ۔ جب کہ تلنگانہ تحریک کو سبوتاج کرنے کی کوشش کرنے والے سرینواس یادو اور کونڈا سریکھا کو گلے لگایا جارہا ہے ۔ جگا ریڈی نے کہا کہ کودنڈا رام کی جانب سے تشکیل کردہ جے اے سی میں کانگریس بھی شامل تھی ۔ کودنڈا رام غریب عوام کے مسائل کو اٹھا رہے ہیں جس کی وجہ سے کانگریس ان کی تائید کررہی ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT