Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے وزراء زبان پر لگام دیں : ملو بٹی وکرامارک

تلنگانہ کے وزراء زبان پر لگام دیں : ملو بٹی وکرامارک

چیف منسٹر کے سی آر کو پروفیسر کودنڈا رام کے سوالات کا جواب دینے کا مشورہ
حیدرآباد ۔ 8 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : ورکنگ پریسیڈنٹ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر ملو بٹی وکرامارک نے کہا کہ عوامی مسائل اٹھانے اور حکومت کی ناکامیوں کو پیش کرنے پر پروفیسر کودنڈا رام کیا کانگریس کے ایجنٹ بن گئے وزراء اپنی زبان پر لگام دیں اور چیف منسٹر کے سی آر کودنڈا رام کے سوالات کا جواب دیں ۔ مسٹر ملو بٹی وکرامارک نے کہا کہ ٹی آر ایس نے تلنگانہ تحریک کے دوران پروفیسر کودنڈا رام کو استعمال کیا ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد انہیں نظر انداز کردیا ۔ 2 سال تک پروفیسر کودنڈا رام نے حکومت کی کارکردگی کا جائزہ لیا ۔ عوامی مسائل اور حکومت کی ناکامیوں کو پیش کیا جس پر 12 وزراء اور ٹی آر ایس کے قائدین پروفیسر پر ٹوٹ پڑے ۔ تعجب کی بات یہ ہے کہ تلنگانہ تحریک کا حصہ نہ رہنے والے وزراء اور ٹی آر ایس کے قائدین نے پروفیسر کودنڈا رام کو تنقید کا نشانہ بنایا اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ حکومت پروفیسر کودنڈا رام سے کتنی خوفزدہ ہے اور پروفیسر کودنڈا رام کی عوام میں اہمیت کیا ہے ۔ ورکنگ پریسیڈنٹ تلنگانہ کانگریس پارٹی نے کہا کہ پروفیسر کودنڈا رام کے اٹھائے ہوئے سوالات کا جواب دینے کے بجائے چیف منسٹر کے سی آر خاموشی اختیار کی ہے ۔ وزراء اور دوسرے قائدین صرف تنقید کرتے ہوئے پروفیسر کودنڈا رام کو خاموش کرانے کی کوشش کررہے ہیں ۔ ٹی آر ایس حکومت تمام محاذوں پر ناکام ہوچکی ہے اور سماج کا کوئی بھی طبقہ حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ہے ۔ ان تمام چیزوں کا باریک بینی سے جائزہ لینے کے بعد کودنڈا رام نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے منتخب عوامی نمائندوں کو ٹی آر ایس میں شامل کرانے کے معاہدے پر چیف منسٹر کے سی آر نے مخالف تلنگانہ مسٹر ٹی ناگیشور راؤ کو تلنگانہ کابینہ میں کمیشن کے طور پر شامل کیا ہے ۔ آبپاشی پراجکٹس میں ڈیزائن تبدیل کرنے کے نام پر پراجکٹس کی قیمتوں کو دو لاکھ کروڑ روپئے تک بڑھاتے ہوئے بڑے پیمانے پر بدعنوانیاں کی جارہی ہیں ۔ کانگریس پارٹی حکومت کی ناکامیوں کو منظر عام پر لاتے ہوئے عوامی مسائل کی یکسوئی کے لیے اپنی جدوجہد کو جاری رکھے گی ۔ انہوں نے پارٹی میں ڈسپلن کو ضروری قرار دیتے ہوئے کہا کہ کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی ہو یا اور کوئی ہو انہیں ڈسپلن کے دائرے میں رہنا چاہئے ۔ حدود عبور کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT