Thursday , July 27 2017
Home / شہر کی خبریں / تلگودیشم کو اب پشیمانی کا سامنا غیر متوقع صورتحال پر صدمہ

تلگودیشم کو اب پشیمانی کا سامنا غیر متوقع صورتحال پر صدمہ

وجئے واڑہ 15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) تلگودیشم ارکان پارلیمنٹ نے کرنسی کا چلن بند کرنے کی وجہ سے عوام کو درپیش مشکلات اور غیر متوقع صورتحال پر صدمہ کا اظہار کیا ہے۔ تلگودیشم پارٹی کافی عرصہ سے یہ مطالبہ کرتی آرہی ہے لیکن ایسا لگتا ہے کہ اُسے اب پشیمانی ہورہی ہے۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ آج تلگودیشم پارٹی اجلاس میں یہی موضوع چھایا رہا۔ صدر این چندرابابو نائیڈو اور ارکان پارلیمنٹ نے غیر متوقع صورتحال پر گہرے دُکھ کا اظہار کیا حالانکہ چیف منسٹر گزشتہ تین سال سے بڑی کرنسی کا چلن بند کرنے کا مطالبہ کرتے آرہے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ ارکان پارلیمنٹ کو چندرابابو نائیڈو سے کہاکہ مرکز خاطر خواہ متبادل انتظامات میں ناکام رہا اور اس کا انتہائی منفی اثر مرتب ہوا۔ جس انداز میں کرنسی بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا اِس کی وجہ سے عام آدمی نقد رقم سے محروم ہوگیا اور اُسے ناقابل بیان مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ مرکز کی جانب سے دو ہزار روپئے کی نوٹ جاری کرنے کے فیصلے نے بھی تلگودیشم کی پشیمانی میں بڑھادی۔ 500 اور ایک ہزار روپئے کے نوٹ بند کرکے دو ہزار روپئے جاری کرنا کیا معنی رکھتا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT