Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / تلگو دیشم اور بی جے پی پر کسانوں کو مشتعل کرنے کا الزام

تلگو دیشم اور بی جے پی پر کسانوں کو مشتعل کرنے کا الزام

دونوں پارٹیوں کو دہلی میں دھرنا منظم کرنے کا مشورہ ، صدر نشین ایس سی کارپوریشن کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 10۔ مئی (سیاست نیوز) تجارتی فصلوں کیلئے امدادی قیمت کے مسئلہ پر تلگو دیشم اور بی جے پی پر کسانوں کو مشتعل کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے ایس سی کارپوریشن کے صدرنشین پی روی نے ان جماعتوں کو چیلنج کیا کہ وہ اگر اس معاملہ میں سنجیدہ ہوں تو دہلی میں وزیراعظم کی قیامگاہ کے روبرو دھرنا منظم کریں۔ تلنگانہ بھون میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے پی روی نے کہا کہ تجارتی فصلوں کیلئے امدادی قیمت کا تعین کرنا مرکزی حکومت کے ہاتھ میں ہے ۔ تلنگانہ حکومت نے مرچ کیلئے فی کنٹل 6000 روپئے ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ مرکز نے صرف 5000 روپئے کا اعلان کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کسانوں کو امدادی قیمت کی فراہمی میں سنجیدہ نہیں ہے ۔ اس بات کا اندازہ اعلان کردہ امدادی قیمت سے ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلگو دیشم اور بی جے پی قائدین تلنگانہ حکومت کے خلاف کسانوں کے درمیان پہنچ کر دھرنا کر رہے ہیں۔ ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ وہ نئی دہلی جاکر وزیراعظم کی قیامگاہ کے روبرو احتجاج کرتے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کسانوں کے درمیان غلط فہمیاں اور اندیشے پیدا کرنے کیلئے بی جے پی ، تلگو دیشم اور کانگریس متحدہ طور پر سازش کر رہے ہیں۔ روی نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے کسانوں کی بھلائی کیلئے جن اسکیمات کا آغاز کیا ہے ، اس سے کسان مطمئن ہیں اور اپوزیشن کی مخالف حکومت مہم کا کوئی اثر نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے دیگر ریاستوں کے مقابلہ کسانوں کی بھلائی کے اقدامات میں مثال قائم کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT