Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تمام طبقات کیلئے نان کریمی لیئر سرٹیفکٹ کا لزوم

تمام طبقات کیلئے نان کریمی لیئر سرٹیفکٹ کا لزوم

تلنگانہ پبلک سرویسک میشن کے واحد مسلم رکن متین الدین قادری کا انکشاف
حیدرآباد۔/27اکٹوبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کی جانب سے کئے جارہے تقررات کے سلسلہ میں مسلم امیدواروں کو نان کِریمی لیئر سرٹیفکیٹ سے متعلق لزوم کے بارے میں امیدواروں میں پائی جانے والی بے چینی کو دیکھتے ہوئے تمام طبقات کیلئے اس سرٹیفکیٹ کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اگرچہ متحدہ آندھرا پردیش میں امیدواروں کیلئے کاسٹ سرٹیفکیٹ کے ساتھ کِریمی یا نان کِریمی لیئر سرٹیفکیٹ کی پیشکشی لازمی قراردی گئی تھی تاہم تلنگانہ حکومت نے اس فیصلہ کو برقرار رکھا۔ تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کی جانب سے تقررات کی کارروائی کے آغاز کے بعد ویب سائٹ پر رجسٹریشن کے سلسلہ میں اس سرٹیفکیٹ کا لزوم صرف مسلم امیدواروں کیلئے رکھا گیا تھا۔ تاہم اقلیتوں میں بے چینی اور تلنگانہ حکومت سے نمائندگی کے بعد تمام طبقات کیلئے اسے لازمی کردیا گیا ہے۔ اس طرح بی سی طبقہ کے A تا E زمرہ جات کیلئے یکساں قواعد مرتب ہوچکے ہیں۔ تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن میں واحد مسلم رکن متین الدین قادری نے اس بارے میں کمیشن کے سکریٹری اور دیگر عہدیداروں سے معلومات حاصل کیں جس پر بتایا گیا کہ یہ شرط صرف مسلمانوں یا بی سی ای کیلئے نہیں ہے بلکہ تمام طبقات کو یہ سرٹیفکیٹ داخل کرنا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ کمیشن کی ویب سائٹ پر اس سلسلہ میں ضروری ترمیم کرتے ہوئے بی سی طبقہ کے تمام زمروں کیلئے نان کِریمی لیئر سرٹیفکیٹ کی پیشکشی کی ہدایت دی گئی جو متعلقہ تحصیلدار سے حاصل کیا جاسکتا ہے۔ متین الدین قادری نے کمیشن کے عہدیداروں سے بات چیت کے بعد ’ سیاست‘ کو بتایا کہ کمیشن نے ویب سائٹ پر نان کِریمی لیئر سرٹیفکیٹ کا نمونہ پیش کیا ہے جسے امیدوار ڈاؤن لوڈ کرتے ہوئے ایم آر او کی تصدیق حاصل کرسکتے ہیں۔ اس طرح بی سی طبقہ کے تمام زمرہ جات سے تعلق رکھنے والے امیدواروں کو سلیکشن کے بعد انٹرویو کے موقع پر کاسٹ کے ساتھ یہ سرٹیفکیٹ بھی پیش کرنا ہوگا۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر تلنگانہ حکومت تمام تحصیلداروں کو نمونہ سرٹیفکیٹ فراہم کردے تو اس سے امیدواروں کو مزید سہولت ہوگی۔ واضح رہے کہ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اس سلسلہ میں تمام ضلع کلکٹرس کو ہدایات جاری کی ہیں۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل بھی ضلع کلکٹرس کو تحریری طور پر رہنمایانہ خطوط جاری کریں گے۔ تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن نے ابھی تک 3000 سے زائد مختلف زمروں کی جائیدادوں کیلئے اعلامیہ جاری کردیا ہے اور بعض عہدوں کے امتحانات بھی مکمل ہوگئے۔ ان جائیدادوں میں مسلمانوں کو 4 فیصد تحفظات پر عمل آوری کی جائے گی چونکہ متحدہ آندھرا پردیش میں پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ تقررات نہیں کئے گئے تھے لہذا ویب سائٹ پر بی سی ای زمرہ شامل نہیں تھا جو تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد شامل کیا گیا ہے۔ کمیشن میں ابتداء میں صدرنشین کے علاوہ 3 ارکان نامزد کئے گئے تھے جن میں ایک مسلم رکن ہے۔ حال ہی میں حکومت نے مزید 6ارکان کو نامزد کیا جس سے ارکان کی تعداد 9ہوگئی۔ کمیشن میں 10ارکان کی نامزدگی کی گنجائش ہے۔ حالیہ عرصہ میں نامزد کئے گئے 6 ارکان میں ایک بھی مسلم شامل نہیں ہے۔ زائد ارکان کے سبب انٹرویو کیلئے ہر رکن کی صدارت میں جو بورڈ تشکیل دیا جائے گا اس کے تحت بہت کم امیدواروں کے انٹرویو کا موقع رہے گا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ حکومت کو چاہیئے کہ انٹرویو کیلئے تشکیل دیئے جانے والے بورڈز میں مسلم نمائندوں کو شامل کریں تاکہ 4 فیصد تحفظات پر عمل آوری کو یقینی بنایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT