Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / تنخواہ میں 23.55 فیصد اضافہ اور تمام ملازمین کیلئے او آر او پی

تنخواہ میں 23.55 فیصد اضافہ اور تمام ملازمین کیلئے او آر او پی

NEW DELHI, NOV 19 (UNI):- Chairman of the Seventh Pay Commission, Justice A.K. Mathur (R) submitted its report to the Union Minister for Finance, Corporate Affairs and Information & Broadcasting, Arun Jaitley, in New Delhi on Thursday. UNI PHOTO - 145U

سرکاری خزانہ پر 1.02 لاکھ کروڑ روپئے کا بوجھ، ساتویں پے کمیشن کی سفارشات
نئی دہلی ۔ 19 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ساتویں پے کمیشن میں جس نے آج اپنی سفارشات مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی کو پیش کردی، مرکزی ملازمین اور وظیفہ یاب ملازمین کیلئے ایک بڑا تحفہ ثابت ہوئی۔ ساتویں کمیشن نے تنخواہ، الاونسیس اور پنشنس میں 23.55 فیصد اضافہ کی سفارش کی۔ علاوہ ازیں فوجیوں کے علاوہ سیول ملازمین کیلئے ایک عہدہ ایک پنشن اصول نافذ کرنے کی خواہش کی جس سے سرکاری خزانہ پر سالانہ 1.02 لاکھ کروڑ روپئے کا اضافی بوجھ عائد ہوگا۔ پے کمیشن کی صدارت جسٹس اے کے ماتھر کررہے تھے۔ ان کی سفارشات 900 صفحات کی رپورٹ پر مشتمل ہے۔ اس رپورٹ پر یکم ؍ جنوری 2016ء سے عمل آوری ہوگی اور اس سے 42 لاکھ مرکزی ملازمین اور 52 لاکھ وظیفہ یاب ملازمین کو فائدہ پہنچے گا۔ اہم سفارشات میں اقل ترین تنخواہ 18 ہزار ماہانہ اور اعظم ترین تنخواہ 2 لاکھ 25 ہزارماہانہ، سالانہ اضافہ تدریجی 3 فیصد برقرار رکھنا، وظائف میں 24 فیصد اضافہ، فوجیوں کے علاوہ دیگر مرکزی ملازمین کے لئے او آر او پی کی سفارش، گریجویٹی کی انتہائی حد 10 لاکھ سے 20 لاکھ کردینا اور گریجویٹی کی اعظم ترین حد میں 25 فیصد اضافہ اور جب بھی گرانی الاونس میں اضافہ کیا جائے وہ 50 فیصد ہونا، کابینی سکریٹری کی تنخواہ موجودہ 90 ہزار کے بجائے ڈھائی لاکھ روپئے ماہانہ، مختصر مدتی فوجی عہدیداروں کو 7 تا 10 سال خدمات انجام دینے کے بعد سبکدوش ہونے کی اجازت، 52 الاونسیس کی برخاستگی اور موجودہ 36 الاونسیس کی برقراری کی سفارش کی گئی ہے۔ ان سفارشات پر عمل آوری سے 47 لاکھ ملازمین اور 52 لاکھ وظیفہ یابوں بشمول محکمہ دفاع کے ملازمین اور وظیفہ یابوں کو فائدہ پہنچے گا۔

آر بی آئی کی ہڑتال سے بینکنگ متاثر
ممبئی ۔ 19 نومبر (سیاست ڈاٹ کام)  حسب معمول بینکنگ کارروائیاں اور باؤنڈ کی تجارت آج آر بی آئی ملازمین کی بطور احتجاج ایک روزہ اجتماعی رخصت اتفاقی کی وجہ سے متاثر ہوئیں ۔ تنخواہوں میں اضافہ کے مطالبہ پر آر بی آئی کے 17 ہزار ملازمین نے ایک روز کی رخصت اتفاقی بطور احتجاج لی تھی ۔ علاوہ ازیں وہ سبکدوشی کی عمر میں بہتری اور آر بی آئی کے اختیارات کی بحالی کا مطالبہ بھی کررہے تھے ۔ یونینوں نے کامیابی کا دعویٰ کیا ہے ۔ لیکن بینک انتظامیہ کے بموجب ہڑتال ناکام رہی۔

TOPPOPULARRECENT