Tuesday , October 24 2017
Home / ہندوستان / تنزیل احمد کے قتل کیس میں کوئی پیشرفت نہیں

تنزیل احمد کے قتل کیس میں کوئی پیشرفت نہیں

شخصی مخاصمت اور دہشت گردی کے پہلو بھی تحقیقات
لکھنو ۔ 7 ۔ اپریل : ( سیاست ڈاٹ کام) : پولیس نے آج بتایا ہے کہ این آئی اے آفیسر تنزیل احمد کے قتل کے سلسلہ میں کئی ایک افراد سے پوچھ تاچھ کی گئی ہے لیکن کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل پولیس ( لا اینڈر آرڈر ) مسٹر دلجیت سنگھ چودھری نے بتایا کہ ہم نے متعدد لوگوں سے پوچھ تاچھ کی ہے لیکن ایک کو بھی حراست میں یا گرفتار نہیں کیا گیا ہے ۔ اگر کوئی ٹھوس ثبوت مل گیا تو میڈیا کو مطلع کیا جائے گا ۔ میڈیا کے ایک گوشہ نے یہ ادعا کیا ہے کہ مقتول این آئی اے آفیسر کے ایک رشتہ دار کو حراست میں لے لیا گیا ہے ۔ چودھری نے ان اطلاعات کی تردید کی ۔ واضح رہے کہ تنزیل احمد جو کہ انڈین مجاہدین سے متعلق دہشت گردی کیس کی تحقیقات کررہے ہیں ۔ انہیں 3 اپریل کی شب نامعلوم موٹر سیکل سوار حملہ آوروں نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ۔ اس حملہ میں ان کی اہلیہ اور 2 بچے بھی زخمی ہوگئے ۔ یہ خاندان بجنور ( اترپردیش ) کے قریب ایک شادی کی تقریب میں شرکت کے بعد واپس آرہا تھا ۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل نے کل کہا تھا کہ تنزیل احمد کے قتل کے پس پردہ شخصی مخاصمت بھی ہوسکتی ہے اور ا مید ہے کہ بہت جلد سنسنی خیز معمہ کو حل کرلیا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ مختلف کڑیوں کو جوڑ کر تحقیقات کی جارہی ہے اور خاندانی معاملت کا بھی جائزہ لیا جارہا ہے ۔ علاوہ ازیں پولیس دہشت گردانہ پہلو سے چھان بین کررہی ہے اور اس خصوص میں انسداد دہشت گردی دستہ ( اے ٹی ایس ) کی خدمات حاصل کی گئی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT