Tuesday , October 17 2017
Home / Top Stories / تھانے قتل کیس کا ملزم 67 لاکھ روپئے کا مقروض تھا

تھانے قتل کیس کا ملزم 67 لاکھ روپئے کا مقروض تھا

دماغی صحت اور جرائم کے ماہرین سے پولیس کی مشاورت
تھانے، 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) تھانے قتل عام کا ملزم حسنین واریکر جس نے خودکشی سے قبل اپنے ہی خاندان کے 14 ارکان کا بے رحمانہ طریقہ سے گلا کاٹ دیا ، اس کیس کے تحقیقات کاروں نے آج یہ انکشاف کیاکہ اُس نے اپنے رشتے داروں سے بھاری قرض حاصل کیا تھا اور تقریباً 67 لاکھ روپئے کا مقروض ہوگیا تھا۔ تھانے پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا کہ حسنین نے بزنس کے نام پر اپنے قریبی رشتے داروں سے 67 لاکھ روپئے کے قرض حاصل کئے تھے۔ اُس نے ٹریڈنگ میں بھی سرمایہ کاری کی تھی اور پولیس یہ بھی تحقیقات کررہی ہے کہ آیا اُسے ٹریڈنگ (حصص بازار) میں نقصان اٹھانا پڑا تھا۔ تحقیقاتی عہدیدار نے اپنا نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ پولیس کو یہ بھی پتہ چلا ہے کہ حسنین نے چند ماہ قبل علاقہ ماجی واڑہ کے قریب ایک کمرہ بھی کرایہ پر حاصل کیا تھا، یہ کمرہ حاصل کرنے کا مقصد کیا تھا، اس کی بھی تحقیقات کی جارہی ہے۔

 

انھوں نے کہاکہ فارنسک رپورٹس کا انتظار ہے، جس کے بعد ہی کیس کی تفصیلات کی توثیق کی جائے گی۔ پولیس ایک میڈیکل شاپ اور ڈاکٹر کا پتہ چلانے کی کوشش میں ہے، جس سے حسنین نے نسخہ حاصل کرنے کے بعد ادویات خریدی تھیں۔ تحقیقات کاروں کو شبہ ہے کہ وہ ایک منتشر ذہن اور منقسم شخصیت کا مالک تھا، جس کے نتیجہ میں اُس نے اپنے خاندان کا صفایا کردیا۔ قبل ازیں تحقیقاتی ٹیم سے وابستہ ایک سینئر پولیس عہدیدار نے بتایا کہ 35 سالہ ملزم کے برتاؤ کے مختلف پہلوؤں کا جائزہ لینے کیلئے دماغی صحت اور جرائم کے ماہرین کا تعاون حاصل کیا گیا تاکہ قتل عام کے پس پردہ محرکات کا پتہ چلایا جاسکے۔ فی الحال تو ملزم کی ذہنی حالت پر ہی شک و شبہ ظاہر کیا جارہا ہے۔ گزشتہ چند ایام میں پولیس ٹیم نے حسنین کے رشتے داروں اور دوستوں کے علاوہ پردیسی بابا درگاہ کے متولی کے بیانات ریکارڈ کئے ہیں جہاں وہ اکثر و بیشتر حاضری دیتا تھا۔پولیس اس پہلو سے بھی تحقیقات کررہی ہے کہ کہیں یہ کالا جادو کا معاملہ تو نہیں ہے۔ اگر ہے تو وہ کس عامل سے متاثر تھا، جس کی ہدایت پر عملیات کیا تھا۔ ملزم حسنین نے جن افراد خاندان کا بہیمانہ قتل کیا تھا، اُن میں والدین، بیوی، بہنیں اور بچے شامل تھے۔ تاہم اس قتل واقعہ میں ملزم کی ایک 22 سالہ بہن صبیحہ بال بال بچ گئی جوکہ شدید زخمی حالت میں اسپتال میں زیرعلاج ہے۔

TOPPOPULARRECENT