Monday , September 25 2017
Home / اضلاع کی خبریں / تہواروں پر توجہ، عوامی مسائل نظر انداز ایم پی نلگنڈہ سکھیندر ریڈی کا حکومت پر سخت ریمارک

تہواروں پر توجہ، عوامی مسائل نظر انداز ایم پی نلگنڈہ سکھیندر ریڈی کا حکومت پر سخت ریمارک

نلگنڈہ۔/14اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی حکومت عوامی مسائل اور کسانوں کے علاوہ خشک سالی جیسے اہم مسائل پر توجہ دینے کے بجائے بتکماں تہوار پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے کروڑہا روپئے خرچ کررہی ہے۔ ریاستی حکومت فوری طور پر خشک سالی سے متاثرہ علاقوں کی نشاندہی کرتے ہوئے مرکز کو منصوبہ جات روانہ کرنے اور ناگرجنا ساگر سے 2ٹی ایم سی پانی کو لفٹ کنال میں چھوڑنے کے اقدامات کرنے کا رکن پارلیمنٹ نلگنڈہ مسٹر جی سکھیندر ریڈی نے اپنی رہائش گاہ پر صحافتی کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے مطالبہ کیا۔انہوں نے آندھرا اور تلنگانہ حکومتوں پر زبردست تنقید کرتے ہوئے بتایا کہ دونوں حکومتوں کے سربراہ عوامی مسائل کو ترجیح دینے کے بجائے تہواروں اور دارالحکومت کے قیام کے متعلق کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں شدید خشک سالی، خودکشی کے واقعات میں اضافہ اور کپاس کی امدادی قیمتوںپرتوجہ  کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو امدادی قیمت کیلئے دھان کو ایف سی آئی یا ملرس پوائنٹ پر خریدی کا مرکز قائم کرنا چاہیئے تاکہ دلالوں کے دھوکہ سے محفوظ رکھا جاسکے اور کسانوں کو خاطر خواہ امدادی قیمت حاصل ہوسکے۔ مسٹر سکھیندر ریڈی نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت عوام کو عید و تہواروں میں مصروف رکھتے ہوئے مسائل کی یکسوئی  کو نظرانداز کررہی ہے۔ عوام کو درپیش مسائل کی یکسوئی پر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے توجہ دلانے پر ایوانوں سے معطل کیا جارہا ہے۔ یہاں تک کہ ان کے مشوروں پر غور تک نہیں کیاجارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف سکریٹری کی جانب سے سنگین مسائل پر جائزہ اجلاس منعقد کرنا چاہیئے لیکن موجودہ حکومت میں چیف سکریٹری نے بتکماں تہوار پر جائزہ اجلاس منعقد کیا ہے۔

 

انہوں نے بتکماں کو ہائی ٹیک تہوار اور کویتماں تہوار قرار دیا اور بتایا کہ اس تہوار کو انفرادی طور پر منایا جاتا ہے اس کے لئے کروڑہا روپئے خرچ کئے جارہے ہیں۔ ضلع سطح پر منعقدہ بتکماں میں ضلع کی چند ایک خواتین بھی حصہ لے رہی ہیں، عوام ان تہواروں سے دور ہیں۔ عوام کے مسائل کی یکسوئی اور خودکشی کے واقعات کو رکوانا بڑا تہوار ہے۔ انہوں نے ہاسٹلوں میں باریک چاول کی سربراہی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہاسٹلوں کو سربراہ کردہ چاول دیکھنے میں باریک ہیں لیکن پکوان کے بعد یہ چاول انتہائی ناقص ہیں۔ باریک چاول کو ایم ایل پوائنٹ پر غیر قانونی طور پر فروخت کیا جارہا ہے۔ اس خصوص میں ضلع کلکٹر کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے توجہ دلائی گئی ہے۔ رکن پارلیمنٹ نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ضلع کو خشک سالی سے متاثرہ قراردیتے ہوئے مرکزی حکومت کو رپورٹ روانہ کرنے پر ہی مرکزی ٹیم کا دورہ کرتے ہوئے خصوصی انتظامات کروانے کی کوشش کرے اور خودکشی کے واقعات کو روکنے کیلئے امدادی قیمتوں کیلئے ملرس پوائنٹ پر مرکز قیام کرنے کے اقدامات کئے جائیں۔ رکن اسمبلی مریال گوڑہ مسٹر بھاسکر راؤ نے کہا کہ ناگرجنا ساگر لفٹ کنال میں 2ٹی ایم سی پانی کی سربراہی کیلئے ریاستی وزیر آبپاشی مسٹر ہریش راؤ سے نمائندگی کی گئی ہے۔ توقع ہے کہ اندرون دو یوم پانی کی سربراہی عمل میں لانے پر تمام تالابوں میں پینے کے پانی کا ذخیرہ کیا جائے گا جس سے کسانوں کو بھی نقصان سے بچایا جاسکتا ہے۔ اس موقع پر کانگریس پارٹی قائدین موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT