Tuesday , October 24 2017
Home / ہندوستان / تیزابی حملوں کے متاثرین کا مفت علاج

تیزابی حملوں کے متاثرین کا مفت علاج

ریاستی حکومتوں کو سپریم کورٹ کی از سر نو ہدایت
نئی دہلی ۔ 7 ۔ ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج تمام ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کو یہ ہدایت دی ہے کہ قبل ازیں جاری کردہ رہنمایانہ خطوط پر عمل آوری کرتے ہوئے تیزابی حملوں کے متاثرین کو معاوضہ ، بازآبادکاری اور مفت علاج فراہم کیا جائے ۔ جسٹس ایم وائی اقبال اور جسٹس سی ناگپن پر مشتمل بنچ نے بہار میں تیزابی حملہ کا شکار ایک خاتون کے کیس کی سماعت کے دوران یہ ہدایت دی ہے اور حکومت بہار سے کہا کہ متاثرہ خاتون کو 10 لاکھ روپئے معاوضہ کی ادائیگی کے علاوہ مفت علاج بشمول از سر نو صورت گری کیلئے سرجری کروائی جائے۔ بنچ نے ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں سے کہا کہ متاثرین کیلئے ممکنہ امداد فراہم کی جاتی ہے جیسا کہ سابق فیصلہ میں وضاحت کی گئی ہے ، فی الحال یہ کیس ، بہار کی ایک غیر سرکاری تنظیم پریورتن کینڈر نے سپریم کورٹ کے رجوع کیا ہے جس میں یہ شکایت کی گئی کہ خانگی دواخانہ متاثرین کا مفت علاج کرنے سے انکار کر رہے ہیں۔ لہذا تیزابی حملوں کے متاثرین کی بازآبادکاری کیلئے دوبارہ ہدایت جاری کی جائے۔ قبل ازیں عدالت عظمیٰ نے تیزابی حملوں کے متاثرین کیلئے امداد کے حق میں یہ ہدایت جاری کی تھی کہ ملک بھر میں واقع تمام خانگی دواخانے مفت علاج بشمول ادویات اور از سر نو سرجری انجام دی جائے اور اس خصوص میں حکومت کی جانب سے ایک سرٹیفکٹ جاری کرتے ہوئے تیزابی حملہ کی تصدیق کی جائے ۔ علاوہ ازیں ملک گیر سطح پر کھئے عام تیزابی مادوں (ایسڈ) کی فروخت پر پابندی عائد کردی ہے اور حکومت سے منظورہ دکانات پر ہی فروخت کیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT