Sunday , May 28 2017
Home / شہر کی خبریں / تیز ہوا اور بارش کے بعد بلدیہ چوکس ، متاثرہ درختوں اور برقی کھمبوں کو ہٹادیا گیا

تیز ہوا اور بارش کے بعد بلدیہ چوکس ، متاثرہ درختوں اور برقی کھمبوں کو ہٹادیا گیا

مختلف محکمہ جات سے تعاون ، عملہ متحرک ، عوام سے بھی تعاون کی اپیل ، کمشنر بلدیہ جناردھن ریڈی کا بیان
حیدرآباد۔10مئی (سیاست نیوز) مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے مختلف محکمہ جات کے تعاون سے اچانک ہوئی بارش کے سبب پیدا شدہ ہنگامی حالات پر قابو پاتے ہوئے 291درخت جو تیز ہواؤں کے سبب اکھڑ گئے تھے انہیں راستوں سے ہٹا دیا گیا اور اسی طرح 32برقی کھمبوں کو تبدیل کرنے میں محکمہ برقی سے مکمل تعاون کیا ہے ۔ ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے بتایا کہ انتظامیہ کی چوکسی کے سبب جن علاقو ں میں درختوں کے گرنے اور پانی جمع ہونے کے علاوہ برقی تاروں اور کھمبوں کے گرنے کی شکایات موصول ہوئی ہیں ان علاقو ںمیں عملہ کے حرکت میں آنے کے سبب صورتحال کو رات دیر گئے قابو میں کرلیا گیا اور بیشتر مقامات پر محکمہ برقی کی جانب سے اندرون دو تا تین گھنٹے برقی سربراہی بحال کردی گئی ۔ کمشنر جی ایچ ایم سی نے بتایا کہ شہری انتظامیہ کی جانب سے بلدی حدود میں گرنے والے درختوں کو سڑکوں سے ہٹانے کا عمل مکمل کرلیا گیا ہے اور سڑکوں کو شدید بارش کے سبب ہونے والے نقصان کا تخمینہ لگایا جا رہا ہے تاکہ ان کے مرمتی کاموں کا فوری آغاز کیا جا سکے۔انہوں نے آج بارش سے شدید متاثرہ علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے کہا کہ جی ایچ ایم سی عملہ کو متحرک رکھا گیا ہے اور محکمہ موسمیات کی پیش قیاسی کے مطابق ان کی تعیناتی برقرار رکھی جائے گی۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ رات دیر گئے اندرون دو گھنٹہ سب سے زیادہ 10سنٹی میٹر بارش مدھورا نگر ‘ سری نگر‘ جوبلی ہلز اور اطراف کے علاقو ںمیں ریکارڈ کی گئی جبکہ شہر اور نواحی علاقوں میں 120تا130کیلو میٹر فی گھنٹہ کی ہوائیں ریکارڈ کی گئی۔کمشنر جی ایچ ایم سی نے بتایا کہ اتنی تیز ہوائیں ہورڈنگس اور بیانرس کیلئے انتہائی خطرناک ثابت ہوتی ہیںاو ران ہواؤں کے سبب بیانرس اکھڑنے کے باعث حادثات رونما ہونے کا خدشہ ہوتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بہت جلد جی ایچ ایم سی عہدیداروں کی جانب سے شہر کے تمام ہورڈنگس کی مضبوطی کا جائزہ لیا جائے گا اور بیانرس کی تنصیب کے خلاف کاروائی کو تیز کیا جائے گا۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ گذشتہ شب بارش کے سبب 54مقامات پر بارش کا پانی جمع ہونے کی شکایات موصول ہوئیں اور ان میں بیشتر نالوںسے پانی کی نکاسی بہتر نہ ہونے کے سبب پانی جمع ہونے والے مقامات ہیں۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ نالوں میں کوئی پلاسٹک یا کچہرا ڈالنے سے اجتناب کریں تاکہ بارش کے پانی کی نکاسی میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہونے پائے۔دونوں شہرو ں میں گرنے والے درختوں کو جی ایچ ایم سی نے محکمہ برقی کی مدد سے کاٹتے ہوئے انہیں سڑکوں سے ہٹا دیا اور برقی بحالی کے اقدامات کو تیز کردیا گیا۔شہر کے بعض علاقوں میں جہاں برقی کھمبے اور ٹرانسفارمر کے علاوہ سب اسٹیشنو ںمیں خرابی پیدا ہوئی تھی ان میں بہتری لانے کے لئے صبح تک بھی محکمہ برقی کے عہدیدار سرگرم رہے۔محکمہ آبرسانی ‘ پولیس ‘ ٹریفک پولیس کے اہلکاروں کو بھی صبح کی اولین ساعتوںسے ہی سڑکوں پر پانی کی نکاسی میں مصروف دیکھا گیا جبکہ بعض ملازمین صفائی کے امور انجام دے رہے تھے اور عہدیداروں نے ان کاموں کی نگرانی کی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT