Tuesday , June 27 2017
Home / ہندوستان / تین باحجاب خاتون سرپنچوں کو روک دیا گیا

تین باحجاب خاتون سرپنچوں کو روک دیا گیا

وزیراعظم کے پروگرام میں سیکوریٹی عملہ کا نازیبا رویہ،  مسلم لیگ ایم پی
نئی دہلی ۔ 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) انڈین یونین مسلم لیگ کے رکن ای ٹی محمد بشیر نے آج لوک سبھا میں یہ دعویٰ کیا کہ کیرالا سے تعلق رکھنے والی تین خاتون سرپنچوں کو حجاب پہننے کی بناء گاندھی نگر میں وزیراعظم نریندر مودی کے پروگرام سے شرکت سے روک دیا گیا۔ دو وزراء نے فوری اس الزام کو مسترد کرتے ہوئے غلط قرار دیا۔ لوک سبھا میں آج وقفہ صفر کے دوران یہ مسئلہ اٹھاتے ہوئے بشیر نے بتایا کہ کیرالا سے تعلق رکھنے والی تین خاتون سرپنچ سوچھ شکتی 2017ء کنونشن برائے خاتون سرپنچ میں شرکت کیلئے گاندھی نگر گئی تھیں۔ وزیراعظم نریندرمودی نے کل اس کنونشن سے خطاب کیا۔ ملک بھر سے تمام خاتون سرپنچوں کو اس پروگرام میں مدعو کیا گیا تھا۔ بشیر نے کہا کہ تین خواتین کو جو حجاب میں تھیں، روک دیا گیا لیکن سیکوریٹی عملہ سے بحث کے بعد انہیں پروگرام میں اس شرط پر جانے کی اجازت دی گئی کہ وہ اپنا حجاب نکال دیں گی۔ انہوں نے کہاکہ پروگرام میں شرکت کیلئے ان خواتین کو 45 منٹ کا وقت لگ گیا اور اس واقعہ کیلئے وزیراعظم نریندر مودی کو قوم سے معذرت خواہی کرنی چاہئے۔ وزیراقلیتی امور مختارعباس نقوی نے ایسے کسی واقعہ کی تردید کی۔ اسی طرح وزیرآب تومر نے کہاکہ محمد بشیر کے اس دعویٰ میں کوئی سچائی نہیں ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT