Tuesday , July 25 2017
Home / Top Stories / تین دن کے وقفہ کے بعد بھی بینکوں پر طویل قطاریں

تین دن کے وقفہ کے بعد بھی بینکوں پر طویل قطاریں

اے ٹی ایمس رقم سے خالی ، آر بی آئی اور حکومت کا تیقن ناکام
نئی دہلی ۔ /13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) تین دن کے وقفہ سے کھلنے والے بینکوں کی شاخوں پر عوام کی طویل قطاریں دیکھی گئیں جبکہ اے ٹی ایمس سے نئے کرنسی نوٹ مختصر سے وقت کیلئے سربراہ کئے گئے ۔ بعد ازاں انہیں بند کردیا گیا ۔ حالانکہ آر بی آئی اور حکومت نے تیقن دیا تھا کہ بینکوں کو کافی رقم فراہم کی جائے گی تاکہ رقم حاصل کرنے والوں کو تکلیف نہ پہنچے ۔ تاہم نہ تو بینکوں میں رقم موجود تھی اور نہ اے ٹی ایم کھلے تھے ۔ مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہا کہ آر بی آئی روزانہ بھاری رقم جاری کررہی ہے ۔ بینکوں کی یونینوں نے آر بی آئی سے مطالبہ کیا کہ تمام بینکوں کو کافی رقم فراہم کی جائے ۔

 

نوٹوں کی تنسیخ سے 5 کروڑ محنت کش بری طرح متاثر : ممتا
کولکتہ بینکرکیخلاف 10 سی بی آئی مقدمات ، کرناٹک سے 7 گرفتار
کولکتہ۔ 13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکز کے نوٹوں کی تنسیخ کے اقدام پر تنقید کرتے ہوئے چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے آج کہا کہ مرکز کے ’’خون آشام‘‘ فیصلہ سے تقریباً 5 کروڑ محنت کش ملک گیر سطح پر بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔ اس بے بصیرت پالیسی سے کروڑوں افراد متاثر ہیں۔ یہ ایک بڑی آفت ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اس فیصلہ کی وجہ سے محنت کشوں کو زبردست دھکہ لگا ہے۔ ایک کروڑ 25 لاکھ محنت کش غیرمنظم شعبہ کے تعلق رکھتے ہیں، ای۔کامرس، چمڑے کا بزنس، پٹ سن کا کاروبار، پارچہ بافی، کانچ کا کام، بیڑی کا کام، جواہرات اور زیورات کا کاروبار بری طرح متاثر ہے۔ کولکتہ کے ایک بینکر کے خلاف سی بی آئی نے 10 مقدمے درج کئے ہیں کیونکہ اس نے قواعد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پرانے نوٹوں کو نئے نوٹوں سے تبدیل کیا تھا۔ 16 افراد کو ملک گیر سطح پر گرفتار کیا گیا ہے اور ان کے قبضہ سے 19 کروڑ روپئے ضبط کئے گئے ہیں۔ تحقیقات ہنوز جاری ہیں۔ بنگلورو سے موصولہ اطلاع کے بموجب انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے ریاست کرناٹک میں 7 افراد کو گرفتار کرتے ہوئے ان کے پاس سے 91.94 روپئے مالیتی نئے کرنسی نوٹ ضبط کئے ہیں جنہیں رقم کی غیرقانونی منتقلی کیلئے استعمال کیا جانے والا تھا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT