Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / تین ریاستوں میں انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے دھاوے چیف منسٹر ہماچل پردیش ویر بھدرا سنگھ کے خلاف تحقیقات میں شدت

تین ریاستوں میں انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے دھاوے چیف منسٹر ہماچل پردیش ویر بھدرا سنگھ کے خلاف تحقیقات میں شدت

نئی دہلی ۔ 20 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے عملہ نے آج تین ریاستوں میں واقع تقریباً ایک درجن مقامات پر دھاوے کئے اور چیف منسٹر ہماچل پردیش ویر بھدرا سنگھ کے خلاف رقومات کی غیرقانونی منتقلی کے کیس کی تحقیقات کے سلسلہ میں معلومات اکھٹا کی گئیں۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ یہ دھاوے دہلی، ممبئی (مہاراشٹرا) اور کولکتہ (مغربی بنگال) میں کئے گئے۔ ویربھدرا سنگھ کے بعض ساتھیوں کے مکانات کی بھی تلاشی لی گئی جن کے نام ایف آئی آر میں درج ہیں۔ ایجنسی نے دارالحکومت دہلی میں ایف آئی آر درج کروایا تھا۔ انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ نے ویر بھدرا سنگھ کے خلاف انسداد غیرقانونی رقومات کی منتقلی کے مختلف دفعات کے تحت کیس درج کیا ہے۔ ستمبر میں اس سلسلہ میں سی بی آئی نے فوجداری شکایت درج کروائی تھی جس کو قابل دست جرم تصور کرکے کیس بنایا گیا ہے۔ ذرائع نے کہا کہ تحقیقات کرنے والوں کو ان مقامات سے بعض اہم دستاویزات حاصل ہوئے ہیں۔ اس جرم کو انجام دینے کیلئے ویر بھدرا سنگھ کی جانب سے جو پیانل بنایا گیا ہے اس پر بھی دھاوے کئے گئے۔ ویربھدرا سنگھ کے ساتھیوں نے جن غیرقانونی طریقہ سے رقومات کی منتقلی کا کام کیا تھا یہ بھی الزام ہیکہ ویربھدرا سنگھ اور ان کے ارکان خاندان کے پاس 2009 اور 2011 کے درمیان 6.1 کروڑ روپئے تھے جب وہ مرکزی وزیر تھے۔ سی پی آئی کو شبہ ہے کہ 2009-11ء کے دوران ویر بھدرا سنگھ نے مبینہ طور پر اپنے اور اپنے خاندان کے ارکان کے نام پر 6.1 کروڑ روپئے کی لائف انشورنس پالیسیاں بھی حاصل کی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT